مشرق وسطیٰ

اسرائیلی فوج کا غزہ کے مضافات میں پیش قدمی کا دعویٰ

ابھی تک غزہ کے لیے ایندھن کی فراہمی کا فیصلہ نہیں کیا ہے: نتن یاہو

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

اسرائیلی وزیر اعظم نتن یاہو نے فخریہ انداز میں کہا ہے ہے کہ ان کی فوج غزہ کے مضافاتی علاقے میں پیش قدمی کر رہی ہے۔ نیز اسرائیلی فوج غزہ کے شمالی حصے میں حماس کو پیچھے دھکیلتی ہوئی مزید اندر جا چکی ہے۔

نتن یاہو کے دفتر سے جمعرات کے روز جاری کردہ بیان میں یہ بھی کہا گیا ہے 'ہم اس وقت جنگ کے نکتہ عروج پر ہیں۔ ہم نے متاثر کن کامیابیاں حاصل کر لی ہیں۔ تاہم اسرائیلی وزیر اعظم کے اس بیان میں اسرائیلی کامیابیوں کوئی تفصیل بیان نہیں کی گئی۔

البتہ یہ سب کو نظر آ رہا ہے کہ اسرائیلی بمباری اور حملوں کے نتیجے میں اب تک 9 ہزار سے زائد فلسطینی غزہ میں شہید ہو چکے ہیں۔ جن میں چار ہزار کے قریب فلسطینی بچے ہیں۔ اسی طرح ایک بڑی تعداد عورتوں کی ہلاکت کی ہے۔

دریں اثنا ایک پریس بریفنگ کے دوران نتن یاہو یہ بھی کہا ہے کہ اسرائیلی حکومت نے غزہ میں ایندھن کی فراہمی بحال کرنے کا ابھی تک کوئی فیصلہ نہیں کیا ہے۔

واضح رہے اسرائیل نے غزہ کا پچھلے سولہ برسوں سے محاصرہ کر رکھا ہے جبکہ سات اکتوبر سے غزہ کے اس محاصرے کو شدید تر کر دیا گیا ہے۔ جس کی وجہ سے پانی سے لے کر خوراک، ادویات اور ایندھن تک کوئی چیز بھی غزہ میں نہیں داخل ہو سکتی۔

انہوں نے اسرائیلیوں کو یقین دلانے کے سے انداز میں کہا میری طرف سے غزہ کو ایندھن کی فراہمی کے لیے کوئی ہدایات دی ہیں اور نہ ہی جنگی کابینہ نے اس طرح کا کوئی فیصلہ کیا ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں