بحرین نے اسرائیل سے سفیر واپس بلا لیا، اقتصادی تعلقات معطل

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
1 منٹ read

بحرینی ایوان نمائندگان [پارلیمنٹ نے اعلان کیا کہ خلیجی ملک نے اسرائیل سے اپنے سفیر کو واپس بلا تے ہوئے تل ابیب کے ساتھ اقتصادی تعلقات معطل کر دیے ہیں۔

ایوان نمائندگان نےجمعرات کے روز ایک بیان میں کہا کہ اسرائیل کا ایلچی بھی بحرین سے روانہ ہو گیا ہے۔

اس نے مزید کہا کہ بحرین کا اپنے ایلچی کو واپس بلانے اور اقتصادی تعلقات کو معطل کرنے کا فیصلہ مملکت کے "ٹھوس اور تاریخی موقف پر مبنی ہے جو فلسطینی کاز اور فلسطینی عوام کے جائز حقوق کی حمایت کرتا ہے۔"

پارلیمنٹ نے "بین الاقوامی انسانی قانون کے احترام کے فقدان کے درمیان اسرائیل کی مسلسل فوجی کارروائیوں اور بڑھتی ہوئی شدت" پر بھی تنقید کی اور غزہ اور تمام فلسطینی علاقوں میں شہریوں کی زندگیوں کے تحفظ کے لیے مزید اقدامات کا مطالبہ کیا۔

بحرین نے 2020 میں امریکی ثالثی میں معاہدہ ابراہیمی کے تحت اسرائیل کے ساتھ سفارتی اور تجارتی تعلقات قائم کئے تھے۔

اس سے قبل اردن نے بدھ کے روز اعلان کیا کہ اس نے اسرائیل سے اپنے سفیر کو واپس بلا لیا ہے اور اسرائیلی سفیر عمان آنے سے روک دیا۔

اسرائیل کی جانب سے غزہ پر مسلسل بمباری جاری ہے، جس میں اب تک کم از کم 9,061 فلسطینی مارے گئے جن میں زیادہ تر بچے تھے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں