مشرق وسطیٰ

امریکہ غزہ میں جنگ بندی کے لیے پورا زور لگائے؛ امارات کا مطالبہ

غزہ کے معاملے میں امریکی کردار اچھا ہوا یا برا، بھلایا نہیں جا سکے گا: انور قرقاش

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

متحدہ عرب امارات کے صدارتی مشیر برائے سفارتی امور نے کہا ہے کہ غزہ کی صورتحال کے پیش نظر امریکہ کو چاہیے کہ وہ جنگ کے فوری خاتمے کے لیے زور لگائے۔

نیز دہائیوں پرانے مسئلہ فلسطین کے حل کے لیے ایک نئے پراسس کا آغاز کرے۔ بصورت دیگر امریکہ کو اس معاملے میں غیر مؤثر سمجھا اور دیکھا جائے گا۔

انور قرقاش نے یہ بھی کہا کہ اسرائیل کی مسئلہ فلسطین کو لٹکائے رکھنے کی پالیسی اس کی پہچان بن چکی ہے۔ اسرائیل اس مسئلے کو حل کرنے میں ناکام ہے اور مطالبہ کرتا ہے کہ پناہ گزینوں کے معاملے کو ایک نئی سوچ کے ساتھ دیکھے اور مشرقی یروشلم کے بارے میں بھی ایک نئی سوچ اختیار کرے۔

اماراتی مشیر نے کہا مسئلے کو حل کرنے کے لیے امریکی کردار کو صرف اسی وقت دیکھا جا سکے گا جب ہم اس جنگ کو ختم ہوتا دیکھیں گے۔ یہ جنگ جتنا جلدی ختم ہو گی اتنا ہی اچھا ہو گا۔ بصورت دیگر آپ جانتے ہیں ہم سب کو کس صورتحال کا سامنا کرنا ہو گا۔

انھوں نے کہا کہ ایسا عمل چاہیے جو مسئلے کو حل کرنے والا ہو اور ایشو کو طے کرنے والا ہو۔ وہ ابوظہبی میں پالیسی کانفرنس سے خطاب کر رہے تھے۔

انھوں نے مزید کہا اگر غزہ کا بحران جاری رہتا ہے، خصوصاً انسانی بنیادوں کے حوالے سے بھی ایک بحرانی صورت رہتی ہے تو ہم ایک دائرے میں گھومنے کے لیے پرانی سطح پر واپس آ جائیں گے اور ہم اسی صورتحال میں واپس آ جائیں گے جو سات اکتوبر سے پہلے کی تھی۔

انھوں نے مزید کہا 'میری رائے میں امریکی کردار اس معاملے میں صحیح ہو یا غلط، اسے بھلایا نہیں جا سکے گا۔ لیکن ابھی امریکی کردار مؤثر ہوتا نہیں دیکھا گیا۔'

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں