غزہ میں اسرائیل نے تین ہسپتالوں کے اطراف بمباری کردی، کئی فلسطینی جاں بحق

الشفا، القدس اور انڈونیشیائی ہسپتال پر بمباری سے زخمیوں کو رفح کراسنگ تک پہنچانے میں خلل پڑا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size

اسرائیل نے جمعہ کے روز غزہ میں تین ہسپتالوں کے اطراف بمباری کردی۔ اس جارحیت میں کئی فلسطینی جاں بحق اور زخمی ہوگئے۔ اسرائیلی فوج نے الشفا، القدس اور انڈونیشیائی ہسپتالوں کو نشانہ بنایا۔ العربیہ کے نمائندے نے اطلاع دی ہے کہ غزہ میں شفا میڈیکل کمپلیکس کے گیٹ پر ایمبولینسوں پر اسرائیلی بمباری میں کئی افراد ہلاک اور زخمی ہوئے ہیں۔

الشفا ہسپتال کے ڈائریکٹر نے العربیہ کو بتایا کہ ایمبولینسوں پر اسرائیلی بمباری تمام بین الاقوامی قوانین کی خلاف ورزی ہے۔ انہوں نے کہا کہ ایمبولینسوں پر اسرائیلی بمباری کے نتیجے میں 13 افراد جاں بحق اور 65 زخمی ہوئے۔

عہدیدار نے کہا کہ بجلی کی کمی کی وجہ سے زخمیوں کی موت ہو جائے گی۔ طبی ٹیمیں خوفناک نفسیاتی دباؤ میں کام کر رہی ہیں۔ انہوں نے کہا غزہ کے ہسپتال زخمیوں کی اتنی بڑی تعداد کو برداشت نہیں کر سکتے۔ خاص طور پر اس صورت میں جب آپریشن میں استعمال ہونے والی زیادہ تر ادویات ختم ہو چکی ہیں۔

الشفا ہسپتال کے ڈائریکٹر نے مزید کہا کہ وہاں زخمی افراد کو علاج کے لیے جگہوں کی کمی کی وجہ سے ہلاک کیا گیا ہے۔ فلسطینی شہاب نیوز ایجنسی نے غزہ میں الشفا میڈیکل کمپلیکس کے ڈائریکٹر کے حوالے سے بتایا کہ آج جمعہ کو غزہ شہر کے مغرب میں واقع کمپلیکس کے دروازے پر اسرائیلی بمباری میں کم از کم 60 فلسطینی ہلاک یا زخمی ہوئے ہیں۔

فلسطینی ہلال احمر نے ایک بیان میں کہا کہ ٹھیک 16:30 بجے اسرائیلی قابض فوج نے غزہ کے مغربی جانب الرشید سٹریٹ پر فضائی حملہ کیا۔ اس کا ہدف ایمبولینسوں کا ایک گروپ تھا جو نقل و حمل کے مشن سے واپس آرہا تھا۔ رفح کراسنگ کے زخمیوں میں ہلال احمر کی ایمبولینس بھی شامل ہے۔ مرکزاطلاعات فلسطین نے کمپلیکس کے ڈائریکٹر کے حوالے سے بتایا کہ بمباری کے نتیجے میں طبی عملے کی بھی ہلاکتیں ہوئیں۔

مقبول خبریں اہم خبریں