تہران سمیت ایران کے تمام شہروں میں فلسطینیوں کے حق میں اور اسرائیل کے خلاف احتجاج

ہزاروں مظاہرین نے امریکی سفارتی عملے کے ارکان کو یرغمال بنانے کے دن کی یاد بھی منائی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
3 منٹس read

ایرانی دارالحکومت تہران میں امریکہ کے سابقہ سفارت خانے کے عمارت کے باہر ہزاروں مظاہرین نے غزہ میں فوری جنگ بندی کا مطالبہ کیا ہے۔ یہ مظاہرین تہران میں امریکی سفارتخانے پر قبضے اور امریکی سفارت کاروں کو یرغمال بنانے کے دن کی یاد منا رہے تھے اور فلسطینیوں کے ساتھ اظہار یکجہتی کر رہے تھے۔

مظاہرین اسرائیل کی حمایت میں کھڑے امریکہ کی بھی مذمت کر رہے تھے۔ ان میں سے کئی امریکی اور اسرائیلی جھنڈے بھی جلا رہے تھے۔ تہران میں یہ مظاہرہ اسرائیل کی غزہ پر بمباری کے چوتھے ہفتے میں داخل ہونے کے حوالے سے کیا گیا ہے۔

ایرانی پارلیمنٹ کے اسپیکر محمد باقر غالباف 4 نومبر 2023 کو غزہ کی پٹی کے فلسطینیوں کی حمایت اور ایرانی یرغمالی بحران کے آغاز کی 44 ویں سالگرہ کے موقع پر تہران میں سابق امریکی سفارت خانے کے باہر ایک ریلی کے دوران خطاب کر رہے ہیں۔
ایرانی پارلیمنٹ کے اسپیکر محمد باقر غالباف 4 نومبر 2023 کو غزہ کی پٹی کے فلسطینیوں کی حمایت اور ایرانی یرغمالی بحران کے آغاز کی 44 ویں سالگرہ کے موقع پر تہران میں سابق امریکی سفارت خانے کے باہر ایک ریلی کے دوران خطاب کر رہے ہیں۔

ایرانی پارلیمنٹ کے سپیکر محمد باقر غالی باف نے اس موقع پر مظاہرین سے خطاب بھی کیا ۔ واضح رہے 4 نومبر 1979 کے تاریخی دن کی یاد منانے آئےہوئے لوگ اس دن ایرانی طلبہ نے امریکی سفارتی عملے کے 52 ارکان کو 444 دنوں کے لیے یر غمال بنایا تھا۔ طلبہ امریکہ سے یہ مطالبہ کر رہے تھے کہ سابق شاہ ایران کو ایران کے حوالے کیا جائے۔

ایک شخص 'انکل سام' کے لباس میں ملبوس اسرائیلی پرچم کے رنگوں کی قمیض پہنے ہوئے، تہران میں سابق امریکی سفارت خانے کے باہر غزہ کی پٹی کے فلسطینیوں کی حمایت اور اس کی 44 ویں سالگرہ کے موقع پر ایک ریلی میں حصہ لے رہا ہے۔
ایک شخص 'انکل سام' کے لباس میں ملبوس اسرائیلی پرچم کے رنگوں کی قمیض پہنے ہوئے، تہران میں سابق امریکی سفارت خانے کے باہر غزہ کی پٹی کے فلسطینیوں کی حمایت اور اس کی 44 ویں سالگرہ کے موقع پر ایک ریلی میں حصہ لے رہا ہے۔

ہفتہ کے روز کیے گئے مظاہرے میں شریک مظاہرین اسرائیلی وزیر اعظم نیتن یاہو اور امریکی صدر جوبائیڈن کی تصاویر کو نشانہ بنا رہے تھے۔ کئی مظاہرین نے امریکہ کے بارے میں بینر اٹھا رکھے تھے جن پر' شیطان بزرگ ' تحریر تھا۔

محمد باقری غالیباف نے اپنے خطاب میں امریکہ کی اسرائیل کے لیے حمایت کی مذمت کی اور کہا ' جرائم پیشہ امریکہ ان سب جرائم کی اصل جڑ ہے۔ جو غزہ میں فلسطینیوں کے خلاف جاری ہیں۔' غالیباف نے دعویٰ کیا ' حماس کا اسرائیل پر کیا گیا حملہ اسرائیل کے لیے ناقابل تلافی نقصان کا باعث بنا ہے۔ اسرائیل کا انٹیلجنس اور فوج کا سارا نظام حماس کے حملے کے سامنے ڈھیر ہو گیا ہے۔

غزہ کی پٹی کے فلسطینیوں کی حمایت اور 4 نومبر 2023 کو ایران کے یرغمالی بحران کے آغاز کی 44 ویں سالگرہ کے موقع پر تہران میں سابق امریکی سفارت خانے کے باہر ایک ریلی کے دوران لوگ اسرائیلی پرچم جلا رہے ہیں
غزہ کی پٹی کے فلسطینیوں کی حمایت اور 4 نومبر 2023 کو ایران کے یرغمالی بحران کے آغاز کی 44 ویں سالگرہ کے موقع پر تہران میں سابق امریکی سفارت خانے کے باہر ایک ریلی کے دوران لوگ اسرائیلی پرچم جلا رہے ہیں

مظاہرین غزہ میں فوری جنگ بندی کا مطالبہ کر رہے تھے، انہوں نے اس موقع پر امریکہ، برطانیہ اور فرانس کو خبردار کیا غزہ کی جنگ پورے خطے میں پھیل سکتی ہے۔ مظاہرین نے اس عزم کا اظہار بھی کیا کہ ایرانی عوام غزہ کے لوگوں کی فتح تک ان کے ساتھ کھڑے رہیں گے۔

ایران کے سرکاری ٹی وی نے اسی نوعیت کی ریلیاں دوسرے ایرانی شہروں اور قصبات میں بھی دکھائی ہیں، جن میں لوگوں نے فلسطینیوں کے حق میں بینر اٹھا رکھے اور نعرے لگا رہے تھے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں