عراقی حزب اللہ بریگیڈ بلینکن پر برہم، سفارت خانہ بند کرنے کی دھمکی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

غزہ کی پٹی میں اسرائیل اور فلسطینی دھڑوں کے درمیان جاری محاذ آرائی کے بڑھتے بین الاقوامی خدشات اور علاقائی جنگ کی طرف رجحان اور امریکی وزیر خارجہ انٹونی بلینکن کے مشرق وسطیٰ کے دورے میں انہیں دھمکی دی ہے۔

عراقی حزب اللہ بریگیڈز کے سکیورٹی آفس کے اہلکار جسے "ابو علی العسکری" کے نام سے جانا جاتا ہے نے کہا کہ ان کی افواج بلینکن کے عراق کے دورے کو ایک غیر معمولی تیزی سے نمٹیں گے‘۔ انہوں نے امریکی وزیر خارجہ کو "صیہونی وزیر جنگ" قرار دیا۔

انہوں نے ہفتہ اور اتوار کی درمیانی شب ٹیلی گرام پر پوسٹ کیے گئے ایک بیان میں زور دیا کہ "مزاحمتی عناصر عراق میں امریکی مفادات کو بند کرنے اور غزہ کی پٹی پر اسرائیلی جارحیت جاری رکھنے کی صورت میں آنے والے دنوں میں خطے میں انہیں خلل ڈالنے کے لیے کام کریں گے"۔

سفارت خانہ بند کرنا

انہوں نے دھمکی دی کہ عراق کے دورے کے دوران وہ فوجی ذرائع کا استعمال کریں گے۔

انہوں نے کہا کہ ہم بغداد میں امریکی سفارت خانے کو بند کرنے اور امریکیوں کو اپنے غیر پرامن طریقے سے ملک میں داخل ہونے سے روکنے کے لیے کام کریں گے۔

بغداد میں امریکی سفارت خانے کے آس پاس سے (آرکائیوز - ایجنسی فرانس پریس)
بغداد میں امریکی سفارت خانے کے آس پاس سے (آرکائیوز - ایجنسی فرانس پریس)

یہ دھمکیاں ایسےوقت سامنے آئی ہیں جب بلینکن خطے کے دورے پر ہیں۔ انہوں نے اسرائیل کا دورہ کیا اور کل ہفتے کے روز اردن کے دارالحکومت عمان میں منعقدہ ایک عرب امریکی وزارتی اجلاس میں شرکت کی، جس میں مصر، اردن کے وزرائے خارجہ، سعودی عرب، امارات، قطر کے وزرائے خارجہ اور فلسطین لبریشن آرگنائزیشن کے سیکرٹری نے غزہ پر اسرائیلی جنگ کو روکنے کے طریقوں پر تبادلہ خیال کیا۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں