فلسطین اسرائیل تنازع

غزہ میں جرائم اور قتل و غارت گری کے لیے امریکہ اسرائیل کی حوصلہ افزائی کرتا ہے: ایران

صدر رئیسی کی عراقی وزیراعظم کے ساتھ تہران میں مشترکہ پریس کانفرنس میں گفتگو

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

ایران نے واضح کیا کہ فلسطینیوں کی ظالمانہ قتل وغارت گری کے لیے امریکہ اسرائیل کی حوصلہ افزائی کر رہا ہے۔ ایرانی صدر ابراہیم رئیسی نے یہ بات پیر کے روز عراقی وزیر اعظم محمد السوڈانی کے ساتھ تہران میں ایک مشترکہ پریس کانفرنس کے دوران کہی ہے۔

انہوں نے بات غزہ میں جاری تباہی اور اسرئیلی بمباری سے ہونے والی 9700 سے زائد ہلاکتوں کے پس منظر میں کہی ہے۔ ابراہیم رئیسی نے کہا "امریکہ سے صہیونی رجیم کو ہر طرح کی مدد کی جارہی ہے کہ وہ فلسطینیوں کے خلاف ظالمانہ اقدامات اور قتل و غارت گری جاری رکھے"

ایرانی صدر نے غزہ پر بم گرائے جانے کے سلسلے کو فوری بند کرنے کا کہتے ہوئے مطالبہ کیا کہ ایک باضابطہ جنگ بندی کا اعلان کیا جائے۔ نیز غزہ کے زیر محاصرہ اور تباہ حال لاکھوں فلسطینیوں کے لیے فوری طور پر بلا تعطل امدادی کارروائی شروع کی جائے۔ '

ان کا یہ بھی کہنا تھا غزہ پر اسرائیلی حملوں کی صورت میں خوفناک جرائم کا ارتکاب کیا جارہا ہے، یہ فلسطینیوں کی نسل کشی ہے۔ جسے امریکہ اور یورپی ممالک کی پوری حمایت کے ساتھ کیا جا رہا ہے۔

خیال رہے عراقی وزیر اعظم محمد السوڈانی نے وزیر خارجہ امریکہ کے گذشتہ رات اچانک ہونے والے دورہ عراق کے فوری بعد ایران پہنچے ہیں۔ وہ مشرق وسطیٰ کے ملکوں کو اسرائیل کے بارے میں رام کرنے کے مشن پر تھے۔

انٹونی بلینکن نے حالیہ دنوں میں عراق اور شام میں امریکی فوجی اڈوں پر حملوں اور دھمکیوں کے خلاف غم و غصہ ظاہر کیا اور کہا ان کی ذمہ داری ایران پر ہے۔

واضح رہے اسرائیلی بمباری کے آغاز سے علاقے میں امریکی فوجی اڈوں کو بھی نشانہ بنانے کی کوشش کی جا رہی ہے۔ عراق ایران کا قریبی پڑوسی ہے تاہم ایران اور عراق دونوں نے ایران کو تسلیم نہیں کیا۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں