فلسطین اسرائیل تنازع

آپ بھی 4142 فلسطینی بچوں کے قتل میں شریک ہیں؟

عرب دنیا میں اسرائیل اور اس کے حامی ملکوں کی مصنوعات کے بائیکاٹ کی مہم پھیل گئی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
3 منٹس read

بحرین کے ایک سہولت سٹور میں 14 سالہ جانا عبداللہ نے اپنے ہاتھ میں ٹیبلیٹ تھاما ہوا ہے اور مغربی ملکوں کے برانڈز کی فہرست دیکھ رہی ہے۔ تاکہ اسرائیل کے حامی ملکوں کی مصنوعات کا بائیکاٹ کر سکے اور ان کی جگہ مقامی اشیا کی خریداری کر سکے۔

جانا عبداللہ کے ساتھ اس کا 10 سالہ بھائی علی اور جانا عبداللہ دونوں مکڈونلڈ کے برگر کھانے کے عادی ہیں۔ دونوں ہر روز مکڈونلڈ کے برگر کھاتے ہیں۔لیکن اب یہ مشرق وسطیٰ کے دوسرے بہت ساروں کی طرح مغرب ملکوں اور امریکی کھانوں کے ساتھ مصنوعات کا بائیکاٹ کر رہے ہیں تاکہ اسرائیل کی مدد کرنے میں شریک نہ ہوں۔

ان مغربی و امریکی مصنوعات کے بائیکاٹ کی مہم پھیل رہی ہے۔ سوشل میڈیا کے ساتھ ساتھ 'ٹک ٹاک ' کے ذریعے جاری ہے۔ بچے بھی اور بڑے بھی سب بڑے بڑے بیں الاقوامی برانڈز سے دور ہونے کی کوشش کر رہے ہیں۔ ان میں ' کے ایف سی ' مکڈونلڈ' کارے فور ' وغیرہ بھی شامل ہیں۔
اس بارے میں جانا عبداللہ نے کہا ' ہم نہیں چاہتے کہ ہم اپنی دولت کے ذریعے اسرائیل کی جاری اس جنگ میں حصہ دار بنیں، اس لیے ہم نے مقامی طور پر متبادل اشیا کی تلاش شروع کر دی ہے۔

یہ صورت حال پوری عرب دنیا میں ہے۔ عرب لوگ اسرئیل کی مسلسل بمباری اور حملوں پر ناراض ہیں کہ ان حملوں کی وجہ سے اب تک 10000 سے زائد فلسطینی عرب جاں بحق ہو چکے ہیں۔ ان میں چار ہزار سے زائد بچے شامل ہیں۔ عورتوں کی تعداد ان بچوں کے علاوہ ہے۔
اس ہلاکت خیز بمباری نے عرب دنیا میں مغربی ، اسرائیلی اور امریکی مصنواعت بطور خاص شامل ہیں۔ اسرائیل کے علاوہ دیگر ممالک کی مصنوعات کے بائیکاٹ کی مہم ان ملکوں کی اسرائیل کے لیے حمایت کے خلاف عوام کا ردعمل ہے۔

اس غم وغصے کی وجہ سے ترکیہ ، اردن نے اپنے سفیر اسرائیل سے واپس بلا لیے ہیں۔ بحرین کی پارلیمنٹ نے اسرائیل کے ساتھ تجارتی معاہدے روک دیے ہیں۔ تاہم بحرین کی حکومت کی طرف سے اس فیصلے کی تصدیق ابھی نہیں کی گئی ہے۔

گوگل کروم کی ایک ایکسٹینشن 'فلسطین پیکٹ' آن لائن تشہیری مہم کا حصہ بننے والی ان چیزوں کی تصویروں کو غیر واضح کر دیتا ہے جو بائیکاٹ اشیاء کی فہرست میں شامل ہوں۔ بائیکاٹ مہم میں روایتی طریقوں کا استعمال بھی کیا جا رہا ہے۔ جیسا کہ کویت میں ہائی وے کے گرد موجود بل بورڈز پر بچوں کی تصاویر ہیں۔ ان اسرائیلی مظالم پر مبنی بل بورڈز پر لکھا گیا ہے ' آپ بھی فلسطینی بچوں کے قتل میں شریک ہیں؟' یہ سوال ان لوگوں سے پوچھا جا رہا ہے جو آج بھی ان اشیاء کا استعمال کر رہے ہیں جو اسرائیل اور اسرائیل کے حامی ملکوں کی ہیں۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں