فلسطین اسرائیل تنازع

حماس کے اہم ٹھکانے پر کنٹرول کر لینے کا اسرائیلی دعویٰ

کامیابی زمینی فوج کی نشاندہی اور جنگی طیاروں کی بمباری سے ہوئی۔ اسرائیلی فوج کا بیان

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size

اسرائیلی فوج نے دعویٰ کیا ہے کہ اس نے غزہ میں حماس کے فوجی قوت کے مرکز کو کنٹرول میں لے لیا ہے۔ اسرائیلی فوج کی مطابق یہ کنٹرول گذشتہ روزیعنی پیر کے روز لیا گیا ہے۔

فوجی بیان میں کہا گیا ہے 'حماس کے اس فوجی مرکز سے ٹینک شکن میزائل، راکٹ لانچرز ، اسلحہ اور انٹیلجینس سے متعلق مواد و آلات بھی ملے ہیں۔'

فوج کے بیان کے مطابق یہ کامیابی زمین پر موجود فوجیوں کے رابطے کی وجہ سے ممکن ہوئی۔ اہم بات ہے کہ اسرائیل کی زمینی فوج کی اس 'بڑی کامیابی' کو اسرائیلی فوج نے ایک دن بعد ظاہر کیا ہے۔

اس کے علاوہ ایک فوجی جیٹ طیارے نے جنگجووں کے ایک سیل پر کارروائی کی۔ اس سیل میں دس دہشت گرد موجود تھے۔ زمینی فوج نے اسی جگہ پر ٹینک شکن میزائلوں کی شناخت کی ہے۔

زمین پر موجود اسرائیلی فوج نے اس بارے میں جنگی طیارے کو بتایا اور اس نے اس سیل پر بمباری کی۔ اسرائیلی فوج کے بیان میں یہ بھی بتایا گیا ہے کہ اسرائیلی بحریہ نے بھی حماس کے اسلحے کے ٹھکانے کو نشانہ بنایا ہے۔

اسی طرح اسرائیلی فوج نے حماس کے جنگجووں کی ایک تعداد کو تلاش کیا جنہوں نے خود کو قدس ہسپتال سے جڑی عمارات میں چھپا رکھا تھا اور فوج پر حملہ کرنے کی تیاری کر رہے تھے۔

بیان میں یہ بھی کہا گیا ہے کہ حماس کا اسلحے کا ڈپو ایک سویلین علاقے میں قائم تھا۔ تاہم اس اسلحے کو قبضے میں لیے جانے کا کوئی ذکر نہیں کیا کیا گیا ہے۔ واضح رہے اسرائیل اپنی زمینی فوج کی کامیابی کو پچھلے کئی دنوں سے بیان کرنے کی کوشش میں ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں