سعودی آرٹسٹ ثنویٰ القرعانی جس کی تخلیقی صلاحیتوں کا جاپانی میگزین کو بھی اعتراف کرنا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size

جاپانی میگزین "سعودی گیٹ" نے اپنا ایک صفحہ سعودی خواتین کے کردار کے بارے میں بات کرنے کے لیے مختص کیا ہے۔اس میں بصری فنکارہ ثنویٰ القرعانی اور ان کے فنی کیرئیر کو سعودی آرٹ کی سفیر بننے پر بھی روشنی ڈالی گئی۔ میگزین نے القرعانی کی تخلیقی صلاحیتوں اور ان کی کامیابیوں کا تفصیلی ذکر کیا ہے۔ میگزین نے القرعانی کو سعودی آرٹ کی ترقی میں سعودی خواتین کے نمایاں کردار کی بہترین مثال قرار دیا۔

العربیہ ڈاٹ نیٹ کے ساتھ گفتگو کرتے ہوئے آرٹسٹ ثنویٰ القرعانی نے کہا کہ میرے کاموں کا انتخاب ان میں حب الوطنی کے جذبے کی وجہ سے کیا گیا ہے۔ جاپانیوں نے احساس کے خلوص، رنگ سازی کی شان اور برش کو حب الوطنی کی ڈرائنگز میں استعمال کرنے کی مہارت کی تعریف کی۔

آرٹسٹ ثنویٰ القرعانی کا شاہکار
آرٹسٹ ثنویٰ القرعانی کا شاہکار

انہوں نے مزید کہا کہ میرا تعلق کسی آرٹ اسکول سے نہیں ہے اور میں کسی علمی قانون پر عمل کرنا پسند نہیں کرتی، بلکہ میرا نقطہ نظر رنگ کے ذریعے فکر میں خوبصورت عکس، فنگر پرنٹ اور ایک خاص انداز تخلیق کرنا ہے۔

انہوں نے کہا کہ مجھے ملک اور بیرون ملک 70 سے زائد مواقع پر قوم کی نمائندگی کرنے کا اعزاز حاصل ہوا۔ میں نے اپنے فنی کاموں کا ایک انتخاب پیش کیا جو مستند سعودی ورثے کی عکاسی کرتے ہیں۔ میں نے بین الاقوامی فورمز پر پنے ملک کے کلچر اور ثقافت کی نمائندگی کی۔

جاپانی میگزین
جاپانی میگزین

انہوں نے کہا کہ کامیابی صرف ثابت قدمی اور استقامت سے حاصل ہوتی ہے، ترقی اور ترقی کی کوششوں پر چلتے رہنا اور ناکامی یا مایوسی اورکے آگے ہار نہ ماننا کامیابی کی منزل سے ہمکنار کرسکتا ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں