مشرق وسطیٰ

اسرائیل اور فلسطینی اتھارٹی محصولات کی تقسیم پر تنازعہ

فلسطینی اتھارٹی نے محصولات کی رقم میں کٹوتی مسترد کر دی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
1 منٹ read

فلسطینی اتھارٹی اور اسرائیل کے درمیان محصولات کے معاملات پر تنازعہ پیدا ہو گیا ہے اور فلسطینی اتھارٹی نے اسرائیل سے محصولات کی مد میں کم رقم وصول کرنے سے انکار کر دیا ہے۔ اسرائیل نے اتھارٹی پر عدم ادائیگی کی شرط عائد کی تھی۔

حسین الشیخ کا اس بارے میں کہنا تھا کہ اسرائیل فلسطینی اتھارٹی کی رقم کی چوری کر رہا ہے۔ انہوں نے مزید کہا کہ فلسطینی زمین اور عوام کے اتحاد پر کوئی سمجھوتا نہیں کر سکتے۔

ان کا مزید یہ کہ جو بھی بجٹ ہو گا اس کا فیصلہ فلسطینی اتھارٹی کریں گی؛ اسرائیل نہیں۔ ان کا کہنا تھا کہ ہم اپنی غزہ کی محصور پٹی کے ساتھ اپنے وسائل تقسیم کریں گے چاہے وہ ایک درہم ہی کیوں نہ ہو۔

اسرائیل فلسطینی اتھارٹی کی طرف سے خود ہی وصولی کرتا ہے اور اس پر تین فیصد کمیشن لیتا ہے۔ محصولات کی رقم مجموعی بجٹ کا 60 فیصد ہے جس میں سے 30 فیصد غزہ کے لیے مختص ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں