فلسطین اسرائیل تنازع

القسام کا غزہ میں 15 اسرائیلی فوجی گاڑیاں تباہ کرنے کا دعویٰ

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size

حماس کے عسکری ونگ القسام بریگیڈز نے منگل کے روز غزہ کی پٹی کے کچھ حصوں میں گھسنے والی متعدد اسرائیلی فوجی گاڑیوں کو تباہ کرنے کا دعویٰ کیا ہے۔

القسام بریگیڈز نے ایک بیان میں کہا کہ انہوں نے غزہ میں الشطی کیمپ اور بیت حنون کے مضافات میں 15 اسرائیلی فوجی گاڑیوں کو تباہ کر دیا۔

یہ اس وقت سامنے آیا ہے جب بریگیڈز نے کل منگل کی صبح اعلان کیا تھا کہ انہوں نے "الیاسین 105" گولوں سے الشاطی کیمپ (غزہ شہر کے مغرب) کے مضافات میں 3 اسرائیلی ٹینک، ایک فوجی کیریئر اور ایک بلڈوزر کو تباہ کر دیا ہے۔

بعد میں ایک بیان میں اس نے کہا کہ اس نے الشاطی کیمپ کے مضافات میں دو اسرائیلی ٹینکوں کو دو "الیاسین 105" گولوں سے تباہ کرنے کا دعویٰ کیا۔

غزہ پر اسرائیلی بمباری

سوموار کے روزالقسام بریگیڈز نے 48 گھنٹوں کے اندر 27 اسرائیلی فوجی گاڑیوں کو جزوی یا مکمل طور پر تباہ کرنے کا اعلان کیا۔

عینی شاہدین نے بتایا کہ کل منگل کو الشاطی کیمپ کے مضافات میں فلسطینی دھڑوں اور اسرائیلی فوج کے درمیان شدید جھڑپیں ہوئیں۔

ایک عینی شاہد نے عرب ورلڈ نیوز ایجنسی کو بتایا کہ "فلسطینی مسلح گروپ کمک کے ساتھ الشاطی کیمپ پہنچے جہاں علاقے میں اسرائیلی دراندازی کا مقابلہ کیا گیا"۔

دوسری جانب اسرائیلی فوج نے منگل کے روز کہا ہے کہ اس نے سوموار کے روز شمالی غزہ کی پٹی میں حماس کے ایک فوجی مرکزکا کنٹرول سنبھال لیا ہے اور اسے ٹینک شکن لانچرز، میزائل، مختلف ہتھیار اور انٹیلی جنس مواد ملا ہے۔

اسرائیلی فوج نے اس مقام کی صحیح جگہ نہیں بتائی۔ حماس نے اسرائیلی فوج کے اس دعوے کی تصدیق یا تردید نہیں کی۔

اس تناظر میں اسرائیلی فوج نے اپنے بیان میں اشارہ دیا کہ غزہ کی پٹی میں فلسطینی دھڑوں کے ارکان کے ساتھ لڑائی جاری ہے۔

گزشتہ 27 اکتوبر سے اسرائیلی فوج اور القسام بریگیڈ کے جنگجوؤں کے درمیان زمینی لڑائی اور براہ راست فوجی تصادم کا دائرہ شمالی غزہ کی پٹی کے کئی علاقوں میں وسیع ہو گیا ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں