فلسطین اسرائیل تنازع

حماس کے اسلحہ ساز کمانڈر کو ہلاک کر دیا: اسرائیلی فوج کا بیان

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

اسرائیلی فورسز نے حماس کے اسلحہ سازی کے ماہر کمانڈر کو ہلاک کرنے میں کامیاب ہونے کی اطلاع دی ہے۔ اس کامیابی کی اطلاع غزہ پر اسرائیلی بمباری اور حملوں کے 32 ویں روز بدھ کو سامنے آئی ہے۔

اسرائیلی فوج کے بیان میں کہا گیا ہے کہ اسرائیلی فوج نے غزہ کے اندر کارروائیاں جاری رکھی ہوئی ہیں اور جنگی طیاروں کو جنگجووں کے مراکز کی نشاندہی کر کے ان سے بمباری کرائی جارہی ہے۔ تاکہ جنگجووں کے عسکری ڈھانچے کو تباہ کیا جا سکے۔

اسرائیلی فوج کی طرف سے بدھ کے روز جاری کردہ بیان میں کہا گیا ہے ' ایک جنگی طیارے نے محسن اوب زینہ کو ایسی ہی ایک کارروائی میں ہلاک کر دیا ہے۔ محسن ابو زینہ حماس کے اسلحہ ساز شعبے کا سربراہ تھا۔ '

بیان کے مطابق ابو زینہ کا اسلحہ سازی کے شعبے میں ایک اہم کردار تھا۔ ابوزینہ کو اسلحہ سازی اور سٹریٹجک ہتھیاروں کے معاملے میں قائدانہ اہلیت حاصل تھی۔

علاوہ ازیں اسرائیلی فوج کے بیان میں بتایا گیا ہے کہ غزہ میں زمینی حملوں کے ذمہ دار فوجی دستے نے ایک ایسے سیل کی نشاندہی کی جو ایک ٹینک شکن کارروائی کی تیاری کر چکا تھا۔

زمینی فوج نے فوری طور پر فضائی کے جنگی طیاروں کو اس سیل پر بمباری کے لیے کہا ۔ اسی طرح زمینی فوج نے فضائیہ کے جنگی طیاروں کو ایک حماس کے ایک ایسے عسکری مرکز کو بھی نشانہ بنانے کے لیے کہا جہاں سے اسرائیل کے خلاف راکٹ فائر کیے جاتے تھے۔ اس مرکز پر بمباری سے کئی دہشت گرد مارے گئے۔'

اسی بیان میں اسرائیلی فوج نے بتایا ہے کہ اس نے ایرانی حمایت یافتہ مسلح ملیشیا کے ٹھکانوں پر حملے کیے ہیں۔ اس سے قبل دہشت گردوں کے ایک مرکز کو نشانہ بنایا گیا جس نے اسرائیل پر ٹینک شکن میزائل داغنے کی کوشش کی تھی۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں