سعودی عرب: العلا رائل کمیشن میں سات عربی چیتوں کی پیدائش

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

سعودی عرب کے رائل کمیشن برائے العلا گورنری نے رواں سال کے دوران 7 عرب چیتے کے بچوں کی پیدائش کا اعلان کیا ہے۔ کمیشن کی جانب سے ماحولیات بحالی اور خطرے سے دوچار چیتوں کی نسل کی بقاء کا اہم قدم ہے۔

الھرامیس (نوزائدہ عربی چیتوں کو دیا گیا نام ہے،اس کا واحد ہرمس ہے) طائف گورنری میں پرنس سعود الفیصل سنٹر فار وائلڈ لائف ریسرچ میں پیدا ہوا۔ گذشتہ پانچ ماہ کے دوران عرب چیتوں کی کل تعداد 27 ہوگئی ہے۔ سنہ2020ء میں عرب چیتے پر رائل کمیشن کے منصوبے کے آغاز کے بعد سے ان شیروں کی تعداد دوگنی ہو گئی ہے۔

عرب چیتے کی نئی پیدائشوں کی کامیابی کے بارے میں رائل کمیشن فار العلا گورنری کا اعلان اقوام متحدہ کی طرف سے ہر سال 10 فروری کو عربی چیتے کے عالمی دن کے طور پر اپنایا جاتا ہے، تاکہ عرب چیتے کو معدوم ہونے سے بچانے کی اہمیت کے بارے میں آگاہی فراہم کی جا سکے۔

انٹرنیشنل یونین فار کنزرویشن آف نیچر کے مطابق، ان شیروں کو انتہائی خطرے سے دوچار نسل کے طور پر درجہ بندی کیا گیا ہے، کیونکہ گذشتہ برسوں میں ان کے قدرتی رہائش گاہوں کے نقصان اور غیر قانونی شکار کے نتیجے میں آج عربی شیروں کی تعداد 200 سے زیادہ نہیں ہے۔

عرب چیتے کی نسل بچانے اوراسے معدوم ہونے کے خطرے سے تحفظ فراہم کرنے کے لیے اتھارٹی "مملکت ویژن 2030" کے اہداف کے حصول کا حصہ ہے۔

العلا پوری تاریخ میں عرب چیتے کا ایک مستند وطن ہے کیونکہ گورنری میں متعدد مقامات پر پتھروں کی کندہ کاری اس کی عکاسی کرتی ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں