"عراقی ملیشیا آزاد ہیں ہم مداخلت نہیں کریں گے"،ایرانی قیادت کا عراقی وزیراعظم کوجواب

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

ایسا لگتا ہے کہ چند روز قبل عراقی وزیر اعظم محمد شیاع السودانی کا دورہ ایران توقعات پر پورا نہیں اتر سکا۔

کچھ ایرانی ذرائع نے انکشاف کیا کہ السودانی مایوس واپس لوٹے ہیں۔

امریکی وزیرخارجہ انٹونی بلنکن کے گذشتہ اتوار کوعراق کے دورے کے بعد السودانی پر زور دیا تھا کہ کہ وہ متعدد ایرانی حمایت یافتہ ملیشیاؤں کے خلاف سخت اقدامات کریں اور خطے میں کسی قسم کی کشیدگی یا اسرائیل کے درمیان غزہ کی پٹی میں جاری تنازعے کو وسعت دینے سے گریز کریں۔

بلنکن کے دورے کے بعدعراق کے وزیراعظم محمد شیاع السودانی نے تہران کا دورہ کیا تھا۔

ذرائع کےمطابق انہوں نے ایرانی رہ نماؤں سے عراق میں امریکی افواج پر ملیشیا کے حملے روکنے کے لیے مدد کی درخواست کی۔ان کا کہنا تھا کہ بغداد کو خدشہ ہے ایرانی ملیشیاؤں کی کارروائیوں سے اس کے سیاسی اور اقتصادی طور پر غیر مستحکم ملک پر اثر پڑ سکتا ہے۔

تاہم ایرانی حکام نے السودانی کو مطلع کیا کہ عراقی مسلح گروپوں نے اپنے فیصلے خود لیے ہیں۔ تہران اس معاملے میں مداخلت نہیں کرے گا۔

یہ کوشش اس وقت سامنے آئی جب السودانی نے تہران کا سفر کرنے سے قبل ملیشیا کوحملے روکنے کے لیے قائل کرنے کی کوشش کی۔

السودانی کے مشیروں نے انکشاف کیا کہ عراقی وزیر اعظم اور ان کی حکومت کے تقریباً 10 سینیر اراکین نے 23 اکتوبر کو بغداد میں تقریباً ایک درجن ملیشیا کے رہ نماؤں سے ملاقات کی تاکہ ان پر امریکی افواج پر حملے روکنے کے لیے دباؤ ڈالا جا سکے۔

تاہم ان کی درخواست پر کان نہیں دھرے گئے، کیونکہ ان مسلح گروہوں کے بیشتر رہ نماؤں نے اس وقت تک اپنے حملے جاری رکھنے کا عہد کیا جب تک کہ اسرائیلی افواج غزہ کی پٹی کا محاصرہ اور بمباری ختم نہیں کر دیتیں۔

علی الترکی حکمران اتحاد میں شامل ایک قانون ساز اور ایرانی حمایت یافتہ عصائب اہل الحق ملیشیا سے وابستہ رہ نما ہیں۔ انہوں نے کہا کہ ’’کوئی بھی نہ وزیر اعظم یا کوئی اور ہمارے فرائض کے خلاف کھڑا نہیں ہو سکتا‘‘۔

عارف الحمامی، ایک اور رکن پارلیمنٹ نےکہا کہ سفارت کاری کے امکانات نظرنہیں آتےمیں نہیں سمجھتا کہ وزیراعظم کے پاس حملوں کو روکنے کی صلاحیت ہے جب تک کہ اسرائیل امریکی مدد سے غزہ میں مظالم کررہا ہے، ہم خاموش نہیں رہ سکتے‘‘۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں