فلسطین اسرائیل تنازع

اسرائیلی بمباری سے ایک مغوی اسرائیلی فوجی ہلاک اور ایک زخمی ہوگیا: حماس

واقعہ جمعرات کے روز اسرائیلی بمباری کے نتیجے میں سامنے آیا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

حماس کے زیر حراست ایک اسرائیلی فوجی ہلاک اور ایک زخمی ہو گیا ہے۔ یہ واقعہ حماس کے مطابق جمعرات کے روز ہونے والی بمباری کے نتیجے میں پیش آیا ہے۔ حماس کے زیر کنٹرول غزہ پر اسرائیلی بمباری سات اکتوبر سے جاری ہے۔

تاہم فلسطینی مزاحمتی گروپ حماس نے اس ہلاک ہونے والے اسرائیلی فوجی کا نام اور زخمی ہونے والے فوجی کی شناخت ظاہر نہیں کی ہے۔ اسرائیلی بمباری سے غزہ کا شاید ہی کوئی علاقہ محفوظ رہا ہے۔ اس سے یرغمالی اسرائیلی فوجی ہوں یا عام اسرائیلی یا کسی اور ملک کے پاسپورٹ ہولڈر سب کی جانوں کے لیے بھی آنے والے دنوں میں خطرہ مزید بڑھ رہا ہے۔

واضح رہے پچھلے ماہ عمر رسیدگی کے باعث حماس کی طرف سے رہا کی جانے والی دو اسرائیلی خواتین میں سے ایک نے اپنی قید کی کہانی پریس کانفرنس میں سنائی تو اس امر کا بھی اظہار کیا کہ وہ کتنے یرغمالیوں کے ایک چھوٹے گروپ میں حماس کی قید میں تھیں،

اس کا مطلب ہے کہ حماس نے اسرائیل کے بیان کردہ لگ بھگ دو سو کے قریب یرغمالیوں کو ہو سکتا ہے الگ الگ جگہوں پر چھوٹی چھوٹی ٹکڑیوں میں پھیلا رکھا ہو۔ جس سے انہیں خود اسرائیلی بمباری سے بھی خطرہ لاحق ہو گیا ہے۔

یہ بھی اہم بات ہے کہ ابھی تک ایک بھی یرغمالی حماس کی قید سے نکل بھاگنے کی خبر سامنے نہیں آئی ہے۔ گویا حماس کے بہت سے ٹھکانے سات اکتوبر سے جاری اس بد ترین جنگ میں بھی غیر معمولی طور پر محفوظ رہے ہیں۔

ادھر فلسطینی وزارت صحت کا کہنا ہے کہ غزہ میں بمباریوں سے فلسطینی ہلاکتوں کی تعداد اب 10812 تک پہنچ گئی ہے۔ ان میں 4412 بچے بھی شامل ہیں ۔

بمباری میں ہلاک ہو چکی فلسطینی عورتوں کی تعداد بھی ہزاروں میں بتائی جاتی ہی۔ جبکہ مجموعی طور پر زخمی فلسطینیوں کی تعداد وزارت صحت کے مطابق 26905 ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں