مشرق وسطیٰ

امیر قطر کی غزہ جنگ بندی اور قیدیوں کے تبادلے پر بات کے لیے مصر آمد

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

قطر کے امیر الشیخ تمیم بن حمد آل ثانی آج جمعہ کو مصر پہنچے جہاں وہ مصری صدر عبدالفتاح السیسی سے ملاقات کریں گے تاکہ غزہ کی صورتحال پر تبادلہ خیال کیا جا سکے۔

باخبر مصری ذرائع کے مطابق دونوں فریقین جنگ بندی، جنگ بندی تک پہنچنے، اسرائیلی اور فلسطینی فریقوں کے درمیان قیدیوں کے تبادلے اور غزہ کی پٹی پر مسلط محاصرہ ختم کرنے کے طریقوں کے ساتھ ساتھ غزہ کی پٹی کی بائیس لاکھ آبادی کو امداد پہنچانے کےطریقوں پر تبادلہ خیال کریں گے۔

قبل ازیں گذشتہ روز حماس کے سربراہ اسماعیل ھنیہ اورخالد مشعل نے مصر کے دورے کے دوران قاہرہ میں مصری انٹیلی جنس چیف عباس کامل سے ملاقات کی تھی۔

العربیہ ڈاٹ نیٹ کے ذرائع کے مطابق حماس کی قیادت اور مصری انٹیلی جنس چیف نے غزہ کی پٹی میں جاری جنگ، جنگ بندی کے امکانات، قیدیوں کے تبادلے اور غزہ کی پٹی کو امداد کی فراہمی پر تبادلہ خیال کیا۔

فوری جنگ بندی

ذرائع نے کہا کہ حماس کے وفد جس میں سیاسی بیورو کے سربراہ اسماعیل ہنیہ، بیرون ملک تحریک کے سربراہ خالد مشعل اور عرب تعلقات کے دفتر کے سربراہ خلیل الحیہ شامل تھے۔ انہوں نے فلسطینی عوام کے خلاف جاری اسرائیلی حملوں پر تبادلہ خیال کیا۔

ذرائع نے بتایا کہ ملاقات کے دوران اسرائیلی جیلوں میں زیر حراست فلسطینی قیدیوں کے تبادلے کے معاہدے پر عمل درآمد، غزہ میں فلسطینی دھڑوں کے زیر حراست اسرائیلی افسروں اور فوجیوں کے قیدیوں کے تبادلے پر بھی تبادلہ خیال کیا گیا۔

مصری ذرائع نے اس سے قبل غزہ میں انسانی بنیادوں پر جنگ بندی تک پہنچنے کے لیے گہرے رابطوں کی موجودگی کی تصدیق کی تھی۔

ایک متعلقہ سیاق و سباق میں، غیر ملکی اور مصری قومیتوں کے حاملین آج جمعہ کو غزہ سے رفح کراسنگ عبور کریں گے۔

فلسطینی کراسنگ اتھارٹی نے اعلان کیا ہے کہ 131 مصری اور 594 امریکی امریکی، کینیڈین، ڈینش، پولش، انڈونیشیا، ہندوستانی، چینی، آسٹریلوی، نیوزی لینڈ، ڈچ اور ملائیشین قومیتوں کے لوگوں کو بیرون ملک جانے کی اجازت دی گئی ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں