نیتن یاہو کے مشیر کو فلسطینی زخمیوں کا مذاق اڑانا مہنگا پڑ گیا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

غزہ کی پٹی میں اسرائیل اور فلسطینی دھڑوں کے درمیان جنگ شروع ہونے کے پہلے دنوں سے سیکڑوں اسرائیلی اہلکار سوشل میڈیا پر مہم شروع کرنے کے لیے متحرک ہو چکے ہیں۔

وہ ان مہمات میں فلسطینیوں کے بیانیے اور یہاں تک کہ ہلاک اور زخمی ہونے والوں کی تعداد پر سوال اٹھارہے ہیں۔

ان میں سے بہت سے "ایکس" پلیٹ فارم پرایسے مناظر اور معلومات نشر کرنے کے لیے سرگرم ہیں جو کبھی قابل اعتراض اور کبھی گمراہ کن ثابت الفاظ پر مشتمل ہوتی ہیں۔

ان میں عرب دنیا کے لیے اسرائیلی وزیراعظم کے ترجمان اویر جندلمن بھی شامل ہے۔

اپنی تازہ ترین غلطی میں اس نے جمعرات کو اپنے"ایکس" اکاؤنٹ پرغزہ کی پٹی میں زخمی فلسطینیوں کی ایک ویڈیو پوسٹ کی "۔ اس نے ان کی چوٹوں کا مذاق اڑاتے ہوئے کہا کہ فلسطینی زخمی ہونے کا ناٹک کر رہے ہیں‘‘۔

اس نے جو کلپ شیئر کیا اس میں ایک نوجوان فلسطینی لڑکی خون میں لت پت دکھائی دے رہی تھی، جب کہ وہاں موجود لوگوں میں سے ایک نے اس المناک منظر کو حتمی شکل دی۔

تاہم اسرائیلی حکومت کے مشیر کے اس مذاق پر سخت رد عمل آیا۔

معلوم ہوا کہ ویڈیو کلپ مختصر فلم "دی ٹروتھ" کی پردے کے پیچھے کی ویڈیو ہے جسے لبنانی اداکاروں نے غزہ کے رہائشیوں کی مدد کے لیے لبنان میں فلمایا تھا۔

7 اکتوبر کے بعد یہ پہلا موقع نہیں ہے کہ اسرائیل کے سرکاری اکاؤنٹس پر غزہ کی پٹی میں جاری جنگ کے بارے میں ویڈیوز اور گمراہ کن معلومات پھیلائی گئی ہوں۔

اسرائیلی حکام نے اس سے قبل ایک تصویر شیئر کی تھی جس کے بارے میں ان کا کہنا تھا کہ وہ حماس کے جنگجوؤں کی طرف سے جلایا گیا بچہ تھا، تاہم یہ مصنوعی ذہانت سے تیار کردہ ایک فوٹو تھا۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں