فلسطین اسرائیل تنازع

غزہ میں جنگ بندی کے حوالے سے کسی دباؤ میں نہ آئیں: نیتن یاہو کا امریکا کو پیغام

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size

اسرائیلی وزیر اعظم بنجمن نیتن یاہو نے کل ہفتے کو اعلان کیا کہ وہ غزہ پر پوری طاقت کے ساتھ حملہ جاری رکھیں گے۔ انہوں نےامریکا سے مطالبہ کیا ہے کہ وہ غزہ کی پٹی میں جنگ بندی کے حوالے سے کسی دباؤ کے سامنے نہ جھکے۔

انہوں نے ایک پریس کانفرنس میں مزید کہا کہ "ہم اپنے لیے امریکی فوجی حمایت کو سراہتے ہیں لیکن امریکا میں کچھ آوازیں ایسی ہیں جو ہماری حمایت نہیں کرتیں اور ہم ان سے لڑ رہے ہیں"۔

انہوں نے امریکیوں سے مطالبہ کیا کہ وہ غزہ میں جنگ کو روکنے کے لیے امریکا میں اقلیتوں کے دباؤ کے سامنے نہ جھکیں۔

انھوں نے مغرب میں جنگ کی مذمت کرنے والی آوازوں پر تنقید کرتے ہوئے کہا کہ’’ایسے لوگ ہیں جو لیڈروں پر دباؤ ڈال رہے ہیں، لیکن میں ان سے کہتا ہوں کہ دباؤ میں نہ آئیں، ہماری جنگ بھی آپ کی جنگ ہے‘‘۔

حزب اللہ کو انتباہ

اسرائیلی وزیر اعظم نے مزید کہا کہ "میں نے حزب اللہ کو غلطی کرنے اور جنگ میں داخل ہونے سے خبردار کیا ہے۔ ہم تمام محاذوں، خاص طور پر شمالی محاذ پر آگے بڑھنے کے لیے تیار ہیں۔

انہوں نے کہا کہ "اغوا کیے گئے لوگوں کی واپسی ہمارے لیے ایک بڑا ہدف ہے۔ قیدیوں کی واپسی کے بغیر کوئی جنگ بندی نہیں ہوگی‘‘۔

غزہ میں اسرائیلی فوج
غزہ میں اسرائیلی فوج

انہوں نے کہا کہ "یرغمالیوں کی رہائی کے لیے مذاکرات موساد کے ذریعے کیے جارہے ہیں۔"

نیتن یاہو نے واضح کیا کہ تل ابیب کسی بھی صورت میں غزہ پر سکیورٹی کنٹرول ترک نہیں کرے گا۔ انہوں نے دعویٰ کیا کہ اسرائیلی فورسز نے غزہ کی پٹی کا محاصرہ مکمل کر لیا ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں