فلسطین اسرائیل تنازع

"خوفناک" اطلاعات کے درمیان عالمی ادارہ صحت کا الشفاء ہسپتال سے رابطہ منقطع

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
3 منٹس read

عالمی ادارہ صحت کے ڈائریکٹر جنرل نے اتوار کے روز کہا ہے کہ تنظیم کا غزہ کی پٹی کے الشفاء ہسپتال سے رابطہ منقطع ہو گیا ہے۔ انہوں نے ہسپتال کو بار بار حملوں کا نشانہ بنائے جانے کو "خوفناک" قرار دیا۔

عالمی ادارہ صحت کےڈائریکٹرٹیڈ روس اڈھانوم اور گیبرییسوس نے’ایکس‘ پلیٹ فارم پر ہسپتال کے ہیلتھ ورکرز، مریضوں، زخمیوں، بچوں اور اس کے اندر موجود بے گھر افراد کی حفاظت کے بارے میں گہری تشویش کا اظہار کیا۔

انہوں نے انسانی ہمدردی کی بنیاد پر غزہ میں فوری جنگ بندی کے مطالبے کی تجدید بھی کی کیونکہ "زندگیوں کو بچانے اور مصائب کی خوفناک سطح کو کم کرنے کے لیے جنگ بندی کے سوا کوئی راستہ نہیں۔

انہوں نے خبردار کیا کہ ایسی اطلاعات ہیں کہ ہسپتال سے نکلنے والوں کو گولیا ماری گئی ہیں اور انہیں قتل کیا جا رہا ہے۔ اسرائیلی ٹینک ہسپتال کو گھیرے میں لے رہے ہیں۔

انہوں نے کہا کہ تنظیم "مریضوں اور شدید زخمیوں کے طبی انخلاء کا مطالبہ کرتی ہے۔ انہیں بغیر کسی رکاوٹ کے پائیدار، منظم اور محفوظ طریقے سے انخلاء کا موقع دیا جائے۔

یونیسیف کا جنگ بندی کا مطالبہ

اسی تناظر میں اقوام متحدہ کے ادارہ برائے اطفال ’یونیسیف‘ نے اتوار کے روز اس بات پر اپنی تشویش کا اظہار کیا کہ اس نے غزہ کی پٹی کے الشفاء ہسپتال میں بجلی کی بندش کے نتیجے میں قبل از وقت پیدا ہونے والے بچوں کی موت کی نشاندہی کی ہے۔

غزہ شہر کے الشفاء ہسپتال کا منظر
غزہ شہر کے الشفاء ہسپتال کا منظر

اس نے ’ایکس‘ پلیٹ فارم پر کہا کہ "غزہ میں الشفاء ہسپتال بجلی کے بغیر ہے اور ہمیں انکیوبیٹرز میں قبل از وقت بچوں کی موت کی خبروں پر تشویش ہے۔"

تنظیم نے انسانی ہمدردی کی بنا پر غزہ میں فوری جنگ بندی کا مطالبہ کرتے ہوئے کہا کہ "ہسپتالوں اور بچوں کو تحفظ فراہم کیا جانا چاہیے"۔

قبل ازیں آج فلسطینی مرکز اطلاعات نے بتایا کہ الشفاء اسپتال میں بجلی مکمل طور پرکردی گئی ہے۔

غزہ کی پٹی میں الشفاء میڈیکل کمپلیکس کے ڈائریکٹر محمد ابو سلمیہ نے بھی کل ہفتے کے روز اس بات کی تصدیق کی کہ ہسپتال کے قریب پرتشدد انداز میں بمباری کا سلسلہ بدستور جاری ہے۔ انہوں نے کہا کہ ایسے گولے ہیں جو آکسیجن اسٹیشن کے حصے تک پہنچ گئے ہیں اور ہسپتال کی متعدد عمارتوں کو تباہ کردیا گیا ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں