اسرائیل الشفاء ہسپتال پر قبضے کوغزہ کے سقوط کی علامت بنانا چاہتا ہے: فلسطینی وزیراعظم

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size

فلسطین کے وزیر اعظم محمد اشتیہ نے پیر کے روزکہا ہے کہ اسرائیل نے الشفاء ہسپتال کو "غزہ پر اپنے کنٹرول کا عنوان " بنا دیا ہے۔

اشتیہ نے ایک ٹیلی ویژن بیان میں مزید کہا کہ اسرائیل الشفاء ہسپتال کے ساتھ "غزہ کا دارالحکومت ہے اور اس کے سقوط کا مطلب غزہ کا سقوط ہے۔ یہ صرف زخمیوں، بیماروں، ڈاکٹروں اور طبی عملے کو قتل کرنے کا بھونڈا جواز ہے"۔

انہوں نے بات جاری رکھتے ہوئے کہا کہ ہسپتالوں پر بمباری، ان کی بجلی کاٹنا، اور ایندھن کو ان تک پہنچنے سے روکنا بین الاقوامی قانون کے مطابق ایک جنگی جرم ہے، جو بھی اسرائیل کو ہتھیار فراہم کرتا ہے وہ بچوں اور خواتین کے خلاف جرائم میں برابر کا مجرم ہے"۔

محمد اشتیہ نے اس امید کا اظہار کیا کہ اقوام متحدہ غزہ کی پٹی میں جنگ زدہ شہریوں تک امداد پہنچانے کے لیے اپنا کردار ادا کرے گی۔

انہوں نے نشاندہی کی کہ اسرائیل پر بین الاقوامی دباؤ ہے کہ وہ فنڈز جاری کرے جو اسرائیل روک رہا ہے۔

فلسطینی وزیر اعظم نے کہا کہ ان کے ملک کے حکام نے قبرص اور غزہ کی پٹی کے درمیان انسانی بنیادوں پر سمندری گذرگاہ کھولنے کی تجویز پیش کی ہے۔

اشتیہ نے کہا کہ "ہم غزہ کے لیے انسانی ہمدردی کی راہداری کھولنے کا مطالبہ کرتے ہیں اور انہیں صرف رفح کراسنگ تک محدود نہیں رکھتے۔

مقبول خبریں اہم خبریں