فلسطین اسرائیل تنازع

حماس کی طرف سے غزہ کے ہسپتالوں کے لیے اسرائیلی ایندھن لینے سے انکارکی تردید

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
1 منٹ read

حماس نے اتوار کے روز اس بات کی تردید کی کہ اس نے غزہ کے الشفاء ہسپتال میں طبی استعمال کے لیے اسرائیل سے 300 لیٹر (79.25 گیلن) ایندھن لینے سے انکار کر دیا تھا۔

حماس نے ایک بیان میں کہا۔ "یہ پیشکش ان مریضوں کے درد اور تکلیف کو کم کرتی ہے جو پانی، خوراک یا بجلی کے بغیر اندر پھنسے ہوئے ہیں۔ یہ مقدار ہسپتال کے جنریٹرز کو تیس منٹ سے زیادہ چلانے کے لیے کافی نہیں ہے۔"

بیان میں یہ بھی کہا گیا کہ حماس الشفاء ہسپتال کے انتظام سے وابستہ نہیں ہے اور "نہ ہی (حماس) اس کے فیصلہ سازی کے ڈھانچے کا حصہ ہے۔ (ہسپتال) مکمل طور پر فلسطینی وزارتِ صحت کے زیرِ اختیار ہے۔"

یہ معاملہ اس وقت سامنے آیا ہے جب اتوار کے روز حماس کے خلاف اسرائیل کے حملے سے شمالی غزہ کے بڑے ہسپتال منقطع ہو گئے تھے۔

طبی عملے نے بتایا کہ شمالی غزہ جو عسکریت پسندوں کا صفایا کرنے اور یرغمالیوں کو آزاد کروانے کے لیے اسرائیل کی ایک ماہ پرانی جنگ کا مرکز تھا، وہاں الشفاء اور علاقے کے دیگر ہسپتال ایندھن اور ادویات کی قلت کی وجہ سے مریضوں کی بمشکل نگہداشت کرنے کے قابل تھے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں