طولکرم میں اسرائیلی فوج کا دھاوا، الاقصیٰ بریگیڈ کے ساتھ جھڑپ، متعدد افراد جاں بحق

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

فلسطین کے علاقے غرب اردن میں اسرائیلی فوج کے طولکرم شہر پر چھاپے کے دوران شہداء الاقصیٰ بریگیڈز کے ساتھ جھڑپ میں متعدد افراد کی ہلاکت کی اطلاعات ہیں۔

یہ پیش رفت ایک ایسے وقت میں سامنے آئی ہے جب غزہ کی پٹی میں اسرائیلی فوج اور حماس کے درمیان گھمسان کی لڑائی جاری ہے۔

اسرائیلی فوج نے غزہ کی پٹی میں زمینی مواصلاتی رابطے، انٹرنیٹ اور موبائل فون سروس بند کردی ہے اور شہریوں سے شمال سے جنوب کی طرف نقل مکانی پر مجبور کیا جا رہا ہے۔

مغربی کنارے میں فلسطینی میڈیا نے منگل کو بتایا کہ الاقصیٰ بریگیڈز نے مغربی کنارے میں طولکرم میں دھاوے کے دوران اسرائیلی فوجی گاڑیوں کو نقصان پہنچانے اور ایک فوجی بلڈوزر کو دھماکہ خیز ڈیوائس سے نشانہ بنایا ہے۔

شہاب نیوز ایجنسی نے شہداء الاقصیٰ کے شہداء کے حوالے سے کہا ہے کہ اس نے طولکرم کیمپ پر دھاوا بولنے والے اسرائیلی فورسز کو جانی نقصان پہنچایا۔

فلسطینی میڈیا نے بتایا ہے کہ طولکرم کے مرکز میں فلسطینی عسکریت پسندوں اور اسرائیلی فوج کے درمیان جھڑپیں ہوئیں۔

شہاب نیوز ایجنسی نے ٹیلی گرام پر اطلاع دی کہ فوج نے طولکرم کیمپ اور شہر کے متعدد محلوں پر دھاوا بول دیا۔ انہوں نے ٹیلی گرام کے ذریعے بتایا کہ شمالی مغربی کنارے میں طولکرم کیمپ پر اسرائیلی بمباری میں تین فلسطینی مارے گئے۔

وزارت صحت نے اطلاع دی ہے کہ گذشتہ ماہ کی سات تاریخ سے شروع ہونے والی غزہ پر اسرائیلی جنگ کے بعد 11 اکتوبر سے اب تک غرب اردن میں 188 افراد شہید اور تقریباً 2700 زخمی ہو چکے ہیں۔

غزہ میں فلسطینی میڈیا نے اطلاع دی ہے کہ پیر کی شام شمالی غزہ کی پٹی میں جبالیہ کے ایک رہائشی چوک پر اسرائیلی بمباری کے نتیجے میں 30 سے زائد افراد مارے گئے۔

الاقصیٰ ٹی وی نے کہا ہے کہ بمباری کے نتیجے میں درجنوں افراد ہلاک اور لاپتہ بھی ہوئے۔ بمباری کے نتیجے میں 12 مکانات مکمل طور پر تباہ ہوگئے۔

غزہ میں سرکاری میڈیا کے دفتر نے پہلے اعلان کیا تھا کہ 7 اکتوبر کو جنگ کے آغاز کے بعد سے پٹی پر اسرائیلی حملوں کے نتیجے میں فلسطینیوں کی ہلاکتوں کی تعداد 11,240 ہو گئی ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں