عالمی دباؤ بڑھنے سے قبل ہمارے پاس دو ہفتے باقی ہیں: اسرائیلی وزیر خارجہ

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

اسرائیلی وزیر خارجہ نے کہا ہے کہ غزہ کی پٹی میں فوجی کارروائیوں کے حوالے سے ان کے ملک پر بین الاقوامی دباؤ بڑھتا جائے گا۔ وزیر ایلی کوہن نے کہا ہمارے پاس بین الاقوامی دباؤ میں اصل میں اضافہ ہونے سے پہلے دو یا تین ہفتے باقی ہیں تاہم ہم قانونی حیثیت کے مارجن کو بڑھانے کی کوشش کر رہے ہیں اور جب تک ضرورت ہو لڑائی جاری رکھیں گے۔

اخبار ’’ یروشلم پوسٹ‘‘نے کہا کوہن نے ایک پریس بریفنگ میں کہا کہ حراست میں لیے گئے افراد کا مسئلہ ایک اہم ٹول کی نمائندگی کرتا ہے۔ وہ سمجھتے ہیں کہ یہ ٹول اسرائیل کو لڑائی جاری رکھنے کے لیے قانونی حیثیت فراہم کر رہا ہے۔

یاد رہے جنگ شروع ہونے کے پانچ ہفتوں سے زیادہ کے بعد انسانی حقوق کی تنظیمیں غزہ کی پٹی میں جنگ بندی کے لیے اپنے مطالبات کو تیز کر رہی ہیں۔

یورپی کمشنر برائے کرائسز منیجمنٹ جینز لینارسک نے بھی پیر کے روز غزہ میں "بامعنی" جنگ بندی اور پٹی میں ایندھن کی فوری ترسیل کا مطالبہ کردیا ہے۔ لینارسک نے برسلز میں بلاک کے وزرائے خارجہ کے اجلاس کے دوران کہا کہ انسانی ہمدردی کی بنیاد پر جنگ بندی اور انسانی قوانین کے احترام کو یقینی بنانے کی فوری ضرورت ہے۔

غزہ میں ایندھن لانا ضروری ہے جیسا کہ آپ دیکھ سکتے ہیں غزہ کی پٹی میں آدھے سے زیادہ ہسپتالوں نے کام کرنا چھوڑ دیا ہے۔

یورپی یونین کے خارجہ امور کے افسر جوزپ بوریل نے زور دیا کہ غزہ کو مزید امداد کی ضرورت ہے خواہ کچھ بھی ہو۔ پانی، ایندھن اور خوراک دستیاب ہے اور سرحد پر غزہ میں داخلے کی اجازت کی منتظر ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں