غزہ پر اسرائیلی قبضہ، سکیورٹی زون بنانا قبول نہیں: شاہ عبداللہ

مسئلہ فلسطین کی جڑ اسرائیل کا فلسطینیوں کے جائز حق سے مسلسل انکار ہے

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

اردن کے شاہ عبداللہ نے غزہ پر کسی بھی قسم کے یا جزوی قبضے کے اسرائیلی منصوبے کو مسترد کرتے ہوئے کہا ہے اسرائیل کا غزہ میں سکیورٹی زون بنانے کا منصوبہ بھی قابل قبول نہیں ہے۔

شاہ عبداللہ کے مطابق مسئلے کی جڑ فلسطینیوں کو ان کے جائز اور قانونی حق سے اسرائیل کا انکار ہے۔ شاہ اردن کی شاہی محل سے کی گئی یہ گفتگو اردنی سرکاری ذرائع ابلاغ نے رپورٹ کی ہے۔

شاہ عبداللہ ملک کے سینئیر سیاسی زعما سے بات کر رہے تھے۔ ان کا دو ٹوک انداز میں موقف تھا 'اسرائیل اور فلسطنیوں کے درمیان تنازعے کا کوئی فوجی حل نہیں ہے۔ غزہ کی پٹی کو فلسطین کے دوسرے علاقوں سے الگ نہیں کیا جانا چاہیے۔ '

ان کا کہنا تھا ' مسئلے کی جڑ فلسطنیوں کے حق سے اسرائیلی انکار ہے۔ جبکہ مسئلے کا حل فلسطینیوں کو ان کا حق دینے سے ہی شروع ہوتا ہے، اس کے علاوہ ہر راستہ تشدد اور تباہی کا راستہ ہے۔ '

مغربی کنارے کی صورت حال کا ذکر کرتے ہوئے شاہ عبداللہ نے کہا ' ایک عرصے سے میں نے اسرائیل کے مغربی کنارے میں تشدد سے خبردار کیا ہے کہ اس کی سرحد ہمارے ساتھ لگتی ہے، یہودی آباد کار فلسطینی شہریوں پر حملے کرتے ہیں ، یہ یہودی حملے پورے علاقے کو ایک کھائی میں گرا سکتے ہیں۔'

شاہ عبداللہ نے مزید کہا ' اردن فلسطینی پناہ گزینوں کی ایک بڑی تعداد کا گھر ہے، انہیں خوف ہے مغربی کنارے سے بھی فلسطینیوں کو نکالا جا سکتا ہے۔ جہاں یہودی آباد کاروں نے فلسطینیوں کے خلاف کارروائیاں تیز کر رکھی ہیں۔ '

واضح رہے مسئلہ فلسطین پر تقریباً ایک عشرے سے رکے ہوئے مذاکرات کی بحالی کے لیے شاہ عبداللہ نے ایک ماہ پہلے بھی کہا تھا ' مستقل امن کا ایک ہی راستہ ہے کہ آزاد فلسطینی ریاست کے لیے مذاکرات بحال کیے جائیں۔'

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں