ایران کا غزہ میں امداد کے حصول کے لیے اقوام متحدہ سے ’فوری‘ کوششوں کا مطالبہ

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size

ایرانی وزیر خارجہ حسین امیر عبداللہیان نے بدھ کے روز اقوام متحدہ سے مطالبہ کیا کہ جنگ زدہ غزہ کو فوری امداد فراہم کرنے کے لیے مزید اقدامات کیے جائیں۔

امیر عبداللہیان نے جنیوا میں اقوام متحدہ کے ہیومینیٹرین چیف مارٹن گریفتھس کے ساتھ ملاقات میں کہا، "غزہ کے لیے بھیجی جانے والی امداد کی رقم بہت کم اور تقریباً صفر ہے اور اقوام متحدہ کے لیے ضروری ہے کہ وہ اس سلسلے میں فوری اور سنجیدہ اقدام کرے۔"

7 اکتوبر کو اسرائیل اور حماس کے درمیان جنگ شروع ہونے کے بعد سے غزہ تک ایندھن کی پہلی ترسیل کے ٹرک بدھ کے روز مصر سے گذرے لیکن فلسطینی پناہ گزینوں کے لیے اقوام متحدہ کے ادارے نے کہا کہ یہ ہرگز کافی نہیں ہے۔

غزہ میں امداد کی فراہمی کے حوالے سے اقوامِ متحدہ اور دیگر حکام کے ساتھ بات چیت کے لیے امیر عبداللہیان منگل سے جنیوا میں ہیں۔

گریفتھس کے ساتھ گفتگو میں انہوں نے "رفح سے رکاوٹیں ہٹانے اور غزہ میں انسانی امداد پہنچانے کے لیے اقوامِ متحدہ سے مضبوط اور فوری انتظام" کا مطالبہ کیا۔

فلسطینی انکلیو نے پانچ ہفتوں سے زیادہ اسرائیلی فضائی اور زمینی حملے کو برداشت کیا ہے جس میں اس کی وزارتِ صحت کے مطابق 11,320 افراد ہلاک ہوئے ہیں جن میں زیادہ تر عام شہری ہیں۔

مقبول خبریں اہم خبریں