اقوام متحدہ کو بدھ کے روز ایندھن فراہم کر دیا جائے گا: اسرائیل

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

ایک اسرائیلی فوجی ترجمان نے بدھ کو بتایا کہ 7 اکتوبر کو حماس کے اسرائیل پر حملے کے بعد سے بدھ کو پہلی بار اقوامِ متحدہ کے ٹرکوں نے غزہ کی پٹی میں ایندھن لانے کی اجازت دی جائے گی۔

لیفٹیننٹ کرنل رچرڈ ہیچ نے سی این این کو ایک انٹرویو میں کہا "آج غزہ کی پٹی کے اندر موجود اقوامِ متحدہ کی تنصیبات کو ایندھن موصول ہو جائے گا۔"

ایندھن لے جانے والا پہلا ٹرک بدھ کے روز رفح کراسنگ سے غزہ پہنچا ہے۔ اندازے کے مطابق یہ مقدار امدادی سرگرمیوں کو درپیش ایندھن کی قلت کے خاتمے کے لیے نہایت قلیل ہے۔

ذرائع کے مطابق اسرائیل نے اقوام متحدہ کے امداد تقسیم کرنے والے ٹرکوں کے لیے غزہ میں 24,000 لیٹر (6,340 گیلن) ڈیزل ایندھن کی منظوری دے کر یہ ترسیل ممکن بنائی۔ اس ایندھن کو ہسپتالوں کے لیے استعمال کرنے کی اجازت نہیں۔

غزہ میں اقوام متحدہ کی امدادی ایجنسی اونروا کے ڈائریکٹر ٹام وائٹ نے سوشل میڈیا پلیٹ فارم پر ایکس پوسٹ کیا، "زندگی بچانے والی سرگرمیوں کو برقرار رکھنے کے لیے ہمیں روزانہ جتنے ایندھن کی ضرورت ہے، یہ اس کا صرف 9 فیصد ہے۔" انہوں نے تصدیق کی کہ 23 ہزار لیٹر سے ذرا زیادہ یا آدھا ٹینکر موصول ہوا تھا۔

اونروا کے ڈائریکٹر فلپ لازارینی نے کہا "ہمارا پورا آپریشن تباہی کے دہانے پر ہے۔ یہ نہایت خوفناک بات ہے کہ ایندھن کو جنگ کے ہتھیار کے طور پر استعمال کیا جا رہا ہے۔"

امدادی کارکنان کہتے ہیں کہ ایندھن کی کمی نے غزہ کے 2.3 ملین باشندوں کے حالات کو مزید خراب کرنے میں اہم کردار ادا کیا ہے۔ یہ ایندھن ہسپتال کے جنریٹروں، پانی کی فراہمی، سیوریج ٹریٹمنٹ اور مواصلات کے ساتھ ساتھ امدادی سامان کی تقسیم کے لیے درکار ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں