فلسطین اسرائیل تنازع

حماس کے رہنما اسماعیل ہنیہ کے گھر پر فضائی حملہ کیا ہے: اسرائیلی فوج

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

اسرائیلی فوج نے جمعرات کو کہا کہ لڑاکا طیاروں نے فلسطینی عسکریت پسند گروپ حماس کے رہنما اسماعیل ہنیہ کے گھر کو نشانہ بنایا۔

اسرائیلی فوج نے ایک بیان میں کہا، "راتوں رات [اسرائیلی فوج کے] لڑاکا طیاروں نے حماس کے سیاسی بیورو کے سربراہ اسماعیل ہنیہ کی رہائش گاہ پر حملہ کیا جو دہشت گردی کے بنیادی ڈھانچے کے طور پر استعمال ہوتا تھا اور اسرائیلی شہریوں اور افواج کے خلاف دہشت گردانہ حملوں کی ہدایات کے لیے اکثر حماس کے سینئر رہنماؤں کی ملاقات کے مقام کا کام دیتا تھا۔

بیان میں مزید کہا گیا: "الشاطی کیمپ پر قبضے کے دوران [اسرائیلی فوج کے] دستوں نے حماس کی بحریہ کے اسلحے کے ذخیرے کو تلاش کر کے تباہ کر دیا جس میں غوطہ خوری کا سامان، دھماکہ خیز آلات اور ہتھیار تھے۔"

اسرائیلی فوج نے یہ بھی کہا کہ فوجیوں نے "دہشت گردوں کو نشانہ بنایا اور دھماکہ خیز بیلٹ، دھماکہ خیز بیرل، آر پی جیز، ٹینک شکن میزائل، مواصلاتی آلات، اور انٹیلی جنس دستاویزات سمیت ہتھیاروں کو تلاش کیا۔"

حماس نے فوری طور پر اسرائیلی دعوے پر کوئی تبصرہ نہیں کیا۔

مزید برآں اسرائیلی فوج نے کہا کہ اس نے الشفاء ہسپتال میں ہدفی کارروائی کی۔

فلسطینی خبر رساں ایجنسی نے جمعرات کو اطلاع دی ہے کہ اسرائیلی فورسز نے 24 گھنٹوں کے اندر دوسری مرتبہ الشفاء ہسپتال پر چھاپہ مارا۔ مقامی ذرائع نے بتایا کہ اسرائیلی بلڈوزر اور ٹینکوں نے رات بھر طبی سہولت کے احاطے کے مغربی دروازے سے یلغار کی جبکہ اسرائیل نے گذشتہ ایک ہفتے سے الشفاء ہسپتال کو فوجی ٹینکوں سے گھیرے میں لے رکھا ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں