فلسطین اسرائیل تنازع

اسرائیل کی غزہ کو ایندھن کی مشروط سپلائی کی اجازت: ذرائع

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

اسرائیلی ذرائع نے اطلاع دی ہے کہ قیدیوں کے حوالے سے کوئی معاہدہ نہ ہونے کے باوجود مصر کو ایندھن سے لدے مزید دس ٹرکوں کو غزہ لانے کی اجازت دی گئی، تاکہ مجموعی طور پر 150,000 لیٹر ایندھن پٹی میں لایا جا سکے۔

ایک اسرائیلی ذریعے کا کہنا ہے کہ یہ فیصلہ منی کابینہ میں کیا گیا ہے۔ اسرائیلی وزیر اعظم نے گذشتہ ہفتوں کے دوران اعلان کیا تھا کہ "جب تک قیدیوں کے معاملے میں پیش رفت نہیں ہو جاتی غزہ کی پٹی میں ایندھن نہیں لایا جائے گا۔"

جنگی کونسل، جس میں عام شہری اور فوجی اہلکار شامل ہیں اور غزہ کی پٹی میں جنگ کے انتظام کے لیے ذمہ دار ہے، نے گذشتہ رات چھ گھنٹے کی میٹنگ کے بعد فیصلہ کیا کہ اسرائیلی فوج اور جنرل سیکیورٹی سروس کی مشترکہ سفارش کو منظور کیا جائے۔

امریکا نے اسرائیل پر زور دیا تھا کہ ایندھن کے دو ٹینکوں کو روزانہ داخل کرنے کی اجازت جائے تاکہ اقوام متحدہ کے پانی کے بنیادی ڈھانچے کی ضروریات کو پورا کیا جا سکے۔

یہ قدم اسرائیل کو حماس کو دبانے کے لیے ضروری بین الاقوامی پوزیشن برقرار رکھنے کی اجازت دیتا ہے۔

دونوں ٹینک رفح کراسنگ سے ہوتے ہوئے اقوام متحدہ کے ذریعے جنوبی غزہ کی پٹی میں شہری آبادی تک اس شرط پر جائیں گے کہ حماس تک کوئی ایندھن نہ پہنچے۔

اس قدم کا مقصد دیگر چیزوں کے علاوہ پانی، صفائی اور حفظان صحت کے نظام میں کم سے کم مدد فراہم کرنا، وبائی امراض کے پھیلنے سے بچنا ہے۔

اس سے پہلے عالمی ادارہ صحت نے جمعے کے روز اعلان کیا تھا کہ وہ غزہ کی پٹی میں بیماریوں کے پھیلاؤ پر انتہائی تشویش کا شکار ہے۔

فلسطینی علاقوں میں عالمی ادارہ کے نمائندے رچرڈ پیپر کارن نے کہا کہ ہم سردیوں کا موسم آنے پر بیماریوں کے پھیلاؤ کے بارے میں بہت فکر مند ہیں۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں