اسرائیل حماس جنگ : عرب اور اسلامی ملکوں کے وزراء کا اہم دورہ چین متوقع

وزراء کے دورہ چین کا فیصلہ عرب اسلامی کانفرنس نے کیا تھا، شہزادہ فیصل بن فرحان

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

عرب اور مسلم دنیا کے وزرا چین کا دورہ کریں گے۔ دورے کا مقصد غزہ جنگ کے خاتمے کے لیےکوششیں ہیں۔ پیر کے روز سے شروع ہونےوالے اس دورے کا پہلا مرحلہ ہو گا۔

یہ بات سعودی وزیر خارجہ شہزادہ فیصل بن فرحان نے رواں ماہ کے شروع میں ہونے والی عرب اسلامی سربراہ کانفرنس میں ہونےوالے فیصلوں کی روشنی میں بتائی ہے۔

شہزادہ فیصل بن فرحان بحرین کے دارالحکومت میں جاری سیکیورٹی کانفرنس کی سائیڈ لائنز میں بات چیت کر رہے تھے۔

عرب اسلامی کانفرنس کی وزارتی کونسل کے ارکان چین کے اس دورے پر جائیں گے۔ بیجنگ کے بعد یہی وزراء دوسرے کئی ممالک کا بھی دورہ کریں گے۔ تاکہ غزہ میں فوری جنگ بندی اور انسانی بنیادوں پر غزہ کے لوگوں کے لیے امدادی سامان کی ترسیل ممکن بنائی جائے۔

دوسری جانب سعودی وزیر خارجہ نے یورپی یونین کے خارجہ پالیسی کے سربراہ جوزپ بوریل کے ساتھ بھی غزہ کی تازہ ترین صورت حال پر تبادلہ خیال کیا ہے۔

وزیر خارجہ نے رپورٹرز سے بات کرتے ہوئے کہا ' اگرچہ بین الاقوامی برادری امن کی اہمیت پر باہم متفق ہے لیکن اس کے باوجود ابھی تک غزہ میں فوری جنگ بندی کے معاملے کو توجہ نہیں دی گئی ہے۔'

شہزادہ فیصل بن فرحان نے کہا ' ہم امید رکھتے ہیں کہ فلسطینی ریاست کے قیام سے مستقل امن ممکن ہو گا تاہم اس کے لیے نئی کوششیں شروع کرنے کی ضرورت ہے۔ اس سے خطے میں بھی امن ہوگا۔'

انہوں نے مزید کہا ' تاہم فوری ضرورت اور ترجیح غزہ میں جنگ روکنے کی ہے۔ اس کے لیے ہم سب کو مل کر کوشش کرنا ہو گی۔ کیونکہ غزہ میں جنگ سے عام شہری مصائب کا شکار بن رہے ہیں۔'

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں