فلسطین اسرائیل تنازع

غزہ کے انڈونیشی ہسپتال پر اسرائیلی بمباری میں ایک درجن فلسطینی شہید، کئی زخمی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

7 اکتوبر کو غزہ کی پٹی پر جنگ شروع ہونے کے بعد سے اسرائیل نے حماس کے مراکز اور ان کے نیچے سرنگوں کی موجودگی کے بہانے خاص طور پر شمال میں پٹی کے بہت سے ہسپتالوں کو نشانہ بنایا ہے۔ تاہم حماس نے بار بار اور واضح طور پر ہسپتالوں کو فوجی مقاصد کے لیے استعمال کرنے کی تردید کی ہے۔

تازہ ترین اسرائیلی بمباری میں غزہ کے انڈونیشیا ہسپتال کو نشانہ بنایا گیا ہے۔

العربیہ/الحدث کے نامہ نگار نے پیر کے روز شمالی غزہ میں انڈونیشیا کے ہسپتال کے آس پاس کے علاقے پر توپ خانے سے شیلنگ اور فضائی بمباری کی اطلاع دی۔

دریں اثنا فلسطینی وزارت صحت نے اعلان کیا کہ انڈونیشیا کے ہسپتال پر اسرائیلی حملے کے نتیجے میں 12 شہید اور متعدد زخمی ہوئے ہیں۔

عینی شاہدین نے تصدیق کی کہ بمباری کے نتیجے میں بے گھر افراد، مریض اور ڈاکٹر زخمی ہوئے۔ انہوں نے وضاحت کی کہ ایک گولہ ہسپتال کے صحن کے اندر گرا، جبکہ قریبی عمارتوں میں سے ایک میں آگ بھڑک اٹھی۔

غزہ میں انڈونیشی ہسپتال (رائٹرز)
غزہ میں انڈونیشی ہسپتال (رائٹرز)

انہوں نے مزید کہا کہ بمباری کی کارروائیوں کی وجہ سے جنریٹر بند ہونے کے بعد ہسپتال سے بجلی منقطع کر دی گئی۔

نیز غزہ کے صحت کے ڈائریکٹر جنرل ڈاکٹر منیر البرش نے بتایا کہ بمباری میں انڈونیشیا کے ہسپتال کے آپریشنز کے شعبے کے ساتھ ساتھ ہسپتال کے اطراف کو بھی نشانہ بنایا گیا۔

قابض اسرائیلی فوج نے الشفاء یسپتال کو گھیرے میں لیاہوا ہے
قابض اسرائیلی فوج نے الشفاء یسپتال کو گھیرے میں لیاہوا ہے

"انڈونیشی" ہسپتال کے اندر موجود صحافیوں میں سے ایک نے ایک ویڈیو کلپ جاری کیا ہے جس میں اس نے ہسپتال کے اندر کی صورتحال کو انتہائی مشکل قرار دیتے ہوئے کہا کہ اسرائیلی فوج کی جانب سے ہسپتال پر گھیرا تنگ کرنے کا خطرہ ہے اور ممکنہ طور پر یہ آخری ویڈیو ہوسکتی ہے۔

مرکزاطلاعات فلسطین نے مذکورہ ہسپتال کی طرف توپ خانے کی گولہ باری کے علاوہ کئی دوسرے مقامات پر شدید گولہ باری کی بھی اطلاع دی۔

اس کے علاوہ اسرائیلی بمباری میں غزہ کی پٹی کے شمال میں جبالیہ میں العودہ ہسپتال کے آس پاس کے علاقے اور رفح کے مشرق میں النجار ہسپتال کے قریب دو مکانات کو بھی نشانہ بنایا گیا۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں