عراقی سر زمین پر امریکی بمباری قابل مذمت ہے: عراقی حکومت

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

عراق میں بمباری کرنے کو امریکی فوج کے مشاورتی کردار کے منافی قرار دیتے ہوئے اس امریکی کارروائی کی عراقی حکومت نے مذمت کی ہے۔ اس امریکی حملے میں عسکری ملیشیا کے آٹھ جنگجو ہلاک ہو گئے تھے۔ بغداد کے جنوب میں امریکی جنگی طیارے کی کارروائی سے ایرانی حمایت یافتہ مسلح گروپ کے آٹھ اہلکاروں کو ہلاک کر دیا ہے۔

امریکہ نے اس کارروائی کو اپنی جوابی کارروائی کا نام دیا ہے کہ اس سے پہلے ملیشیا نے عین الاسد پر امریکی فوجی اڈے کو نشانہ بنایا تھا۔ اس حملے میں کئی امریکی معمولی زخمی ہو گئے تھے۔ جس کے بعد امریکی طیارے نے جوابی کارروائی کی۔

واضح رہے سترہ اکتوبر سے اب تک امریکی فوجی اڈوں پر ساٹھ سے زائد حملے ایرانی حمایت یافتہ گروپ کر چکے ہیں۔ اس ہفتے تک امریکہ کسی بھی ایسی کارروائی کے بدلے میں کارروائی سے گریز کی پالیسی اختیار کیے ہوئے تھا۔

دوسری جانب حزب اللہ سے منسلک ملیشیا نے امریکہ کو انتباہ کیا ہے کہ اس نے عراق کے اندر آئندہ اس طرح کی کارروائی کی تو امریکہ کے خلاف کارروائیوں میں توسیع کر دی جائے گی۔

منگل کے روز کی گئی امریکی کارروائی کو عراقی حکومت نے بھی اسی امریکی کارروائی کی مذمت کی ہے۔ عراقی بیان کے مطابق امریکہ کارروائی عراق کی خود مختاری اور آزادی کے خلاف کارروائی تھی۔

عراقی حکومت کے بیان نے امریکی کارروائی کو عراق میں امریکی فوج کے ایڈوائزری کردار کے بھی منافی قرار دیا ہے۔ ۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں