اسرائیل کے متنازع دورے کے دوران ایلون مسک کو کیا عجیب صورت حال پیش آئی؟

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
3 منٹس read

اسرائیل کے اپنے متنازعہ دورے کے دوران “X” پلیٹ فارم کے مالک ایلون مسک کو ایک ایسی صورتحال کا سامنا کرنا پڑا جسے عجیب و غریب قرار دیا جا رہا ہے۔

جب وہ اسرائیلی پارلیمنٹ سے نکلے تو کنیسٹ کے ایک رکن نے انہیں حیران کر دیا اور ان پر الزام تراشی کی۔

تفصیلات کے مطابق رکن کنیسٹ نسیم فاتوری امریکی مہمان کے ساتھ تصویر لینے کے لیے ایلون مسک کے قریب ہوئے۔ ساتھ ہی اس موقع سے فائدہ اٹھاتے ہوئے ان سے ایک ٹویٹ کے بعد اپنا اکاؤنٹ بند کرنے کی وجہ پوچھی جس میں انھوں نے "پوری غزہ کی پٹی کو جلانے" کا مطالبہ کیا تھا "۔

مسک کے کان میں سرگوشی

تاہم امریکی ارب پتی کے ایک ساتھی نے ایلون مسک کے قریب ہو کر ان کے کان میں سرگوشی کی۔

سوشل میڈیا پر پچھلے چند گھنٹوں کے دوران بڑے پیمانے پر پھیلنے والی ویڈیو میں جو کچھ سنا گیا اس میں مسک کہہ رہے ہیں کہ"مجھے اس کے بارے میں کچھ معلوم نہیں"۔

جب کہ "X" پر کچھ ٹویٹر صارفین نے اطلاع دی کہ مسک کے مشیر نے اس کنیسٹ ممبر کی شناخت کے بارے میں اس کے کان میں سرگوشی کی، جب اس نے اس پر اپنا اکاؤنٹ منجمد کرنے کا الزام لگایا۔

تاہم گردش کرنے والے کلپ میں واضح طور پر نہیں دکھایا گیا کہ فاتور نے کیا کہا۔

کل سوموار کو مسک نے اسرائیلی وزیر اعظم بنجمن نیتن یاہو کے ساتھ ساتھ اسرائیلی صدر اسحاق ہرزوگ سے ملاقات کی۔

ٹیسلا کے چیئرمین نے حماس کو ختم کرنے کی ضرورت سے اتفاق کیا۔ انہوں نے پیرکو "ایکس" ویب سائٹ پر شائع ہونے والی اسرائیلی وزیر اعظم کے پوسٹ میں ان کی ہاں میں ہاں ملاتے ہوئے کہا کہ "ہاں اس کے علاوہ کوئی چارہ نہیں ہے۔حماس کو ہرصورت میں ختم کرنا ہوگا‘‘۔

امریکی کاروبای شخصیت نے جنگ کے خاتمے کے بعد غزہ کی پٹی میں اسرائیل کو "مسلح کرنے" اور "انتہا پسندی سے نمٹنے" میں مدد کرنے کی خواہش کا بھی عندیہ دیا۔ انہوں نے مزید کہا کہ "فرق یہ ہے کہ اسرائیل حماس کے برعکس شہریوں کو قتل کرنے سے گریز کرتا ہے‘‘۔

قابل ذکر ہے کہ اسرائیلی حکام نے ایلون مسک پر یہود دشمنی کا الزام لگایا تھا جب اس نے "ایکس" نیٹ ورک کے ایک صارف کی ایک پوسٹ پر تبصرہ کیا تھا، جس میں اس نے کہا تھا کہ "یہودی برادری سفید فام لوگوں کے خلاف نفرت پھیلا رہی ہے"۔

تاجر نے بعد میں اپنے یہود دشمنی کے الزام کو "جھوٹے الزامات" قرار دیا تھا۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں