فلسطین اسرائیل تنازع

جب تک اسرائیل جنگ بندی پر قائم ہے ہم بھی پابندی کریں گے: القسام

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

منگل کو غزہ کی پٹی کے شمال اور جنوب میں کئی علاقوں میں اسرائیل اور فلسطینی دھڑوں کے درمیان عارضی جنگ بندی کے دوران ہونے والی خلاف ورزیوں کے جلو میں حماس کے عسکری ونگ القسام بریگیڈز کے ترجمان ابو عبیدہ نے کہا ہے کہ شمالی غزہ میں جنگ بندی معاہدے کی اسرائیلی خلاف ورزی کے نتیجے میں کشیدگی پیدا ہوئی ہے۔

انہوں نے اپنے ٹیلی گرام چینل پر پوسٹ کیے گئے ایک بیان میں کہا کہ اسرائیل کی جانب سے شمالی غزہ کی پٹی میں جنگ بندی کے معاہدے کی "واضح خلاف ورزی" کے نتیجے میں کشیدگی پیدا ہوئی اور القسام کے ارکان نے اس خلاف ورزی سے اچھے طریقے سے نمٹا ہے۔

انہوں نے مزید کہا کہ القسام اس وقت تک جنگ بندی کے لیے پرعزم ہے جب تک کہ اسرائیل اس پرقائم ہے۔ ثالث ممالک سے تل ابیب پر دباؤ ڈالنے کا مطالبہ کرتا ہے کہ وہ اسرائیل کو زمین اور فضا میں جنگ بندی کی تمام شرائط پر عمل کرنے کے لیے دباؤ ڈالیں‘‘۔

فائرنگ اور اسموک بم

العربیہ اور الحدث کےنامہ نگار کے مطابق اس سے قبل منگل کو اسرائیلی فورسز نے غزہ شہر کے مغرب میں اور غزہ کی پٹی کے شمال میں الشاطی کیمپ اور الشیخ رضوان کے پڑوس میں آگ اور دھوئیں کے بم برسائے تھے۔

دریں اثنا غزہ کی پٹی میں اسرائیل اور فلسطینی دھڑوں کے درمیان 4 دن کے لیے عارضی جنگ بندی میں توسیع کی گئی جس کے نتیجے میں 68 اسرائیلی قیدیوں کے ساتھ ساتھ دیگر قومیتوں کے کارکنوں کو رہا کیا گیا۔ بدلے میں 150 فلسطینی خواتین اور بچوں کی رہائی عمل میں لائی گئی،

قابل ذکر ہے کہ اسرائیل نے غزہ کی پٹی پر2007ء میں اس وقت محاصرہ مسلط کیا تھا جب حماس پٹی پر برسراقتدار آگئی تھی۔ اس کے بعد غزہ کی پٹی کو خوراک ، پانی، بجلی، ایندھن اور دیگر بنیادی ضروریات کو مسدود کردیا تھا۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں