سعودی عرب میں سالانہ کھیلوں کی تقریبات کا شان و شوکت سے آغاز

6 ہزار سعودی بچے اور نوجوان کھیلوں میں شرکت کریں گے

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size

سعودی عرب میں سالانہ کھیلوں کا آغاز ہو گیا ہے۔ مجموعی طور پر 6000 سعودی بچے حصہ لیں گے۔ کھیلوں کے حوالے سے 53 قسم کی گیمز اور دوسری سرگرمیوں کا اہتمام کیا گیا ہے۔ افتتاحی تقریب ہر حوالے سے ایک شاندار تقریب تھی۔

خوشیوں کے سجائے گئے اس میلے میں روایتی ثقافتی پرفارمنس کے علاوہ رنگ برنگی روشیوں سے مزین روشنیوں کی آسمان سے بارش کے مناظر دیکھنے کو ملے۔ شاہ فہد بین الاقوامی سٹیڈیم ثقافتی مظاہروں ، موسیقی اور رقص کے مظاہرے دیکھنے میں آئے۔سالانہ کھیلیں 10 دسمبر تک جاری رہیں گی۔

تقریب اور سعودی کھیلوں کی اس افتتاحی تقریب میں ایک شاندار شادمانی کا ماحول تھا۔ فرانس سے تعلق رکھنے والے ڈی جے سنیک نے خصوصی پرفارمنس دی۔ یہ ایک ناقابل فراموش موقع تھا۔ سعودی وزیر کھیل نے افتتاحی تقریب میں اپنے خیالات کا اظہار کیا اور کھیلوں کے بارے میں مملکتی ویژن پیش کیا۔ واضح رہے سعودی عرب کی سالانہ کھیلوں کی تقریب میں اتھلیٹکس کی بہترین کارکردگی کے اظہار کا موقع ہے۔

6000 سے زائد اتھلیٹ 53 مقابلوں میں ایک دوسرے کے مقابل ہوں گے۔ ان میں ٹٰینس، باکسنگ، تیربازی اور ریسلنگ کے کھلاڑی شامل ہیں اور تھائی لینڈ کے باکسنگ کھلاڑیوں کو کھیل میں حصہ لینے کی دعوت بھی دی گئی ہے۔

ریاض میں سعودی گیمز 2023 میں اپنے خطاب کے دوران وزیر کھیل۔ (سعد الانزی کی ایک تصویر)
ریاض میں سعودی گیمز 2023 میں اپنے خطاب کے دوران وزیر کھیل۔ (سعد الانزی کی ایک تصویر)

سعودی وزیر برائے کھیل شہزادہ عبدالعزیز بن ترکی نے کہا ہے کہ یہ سب کچھ ولی عہد کے 'ویژن' اور سرپرستی کے مرہون منت ہو رہا ہے۔

حاضرین میں سے ایک شخص احمد بنیان نے کہا کہ افتتاحی تقریبات بہت شاندار تھیں۔ منظم طریقے سے تقریبات کا آغاز ہوا۔ میں نے، میری اہلیہ اور بچوں سب کو بہت اچھا لگا۔

متعدد ملکوں کے شہریوں نے افتتاحی تقریب میں حصہ لیا۔ مقامی لوگوں کی بھی کثیر تعداد تقریب میں موجود تھی۔

دوسرے سعودی گیمز کی افتتاحی تقریب میں مختلف قسم کے پرفارمنس، ایک رسمی شمع ، آتش بازی اور لائٹ شو شامل تھے۔ (سعد الانزی کی ایک تصویر)
دوسرے سعودی گیمز کی افتتاحی تقریب میں مختلف قسم کے پرفارمنس، ایک رسمی شمع ، آتش بازی اور لائٹ شو شامل تھے۔ (سعد الانزی کی ایک تصویر)

شہزادہ عبدالعزیز بن ترکی نے کھیلوں کا باقاعدہ آغاز اپنی تقریر سے کیا۔ انھوں نے اس موقع پر شاہ سلمان اور ولی عہد شہزادہ محمد بن سلمان نے نوجوانوں کی کھیلوں میں شرکت کے لیے حمایت اور حوصلہ افزائی کا ذکر کیا کہ اس کے ذریعے وہ اپنے مقاصد میں کامیاب ہونے کی تڑپ اور جوش حاصل کرتے ہیں۔

مقبول خبریں اہم خبریں