موسمیاتی تبدیلیاں:یواین کی کانفرنس سے اسرائیلی اورفلسطینی صدورکاخطاب ایک ہی دن شیڈول

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

اسرائیل اور فلسطین کے صدور اقوام متحدہ کے زیر اہتمام موسمیاتی تبدیلیوں کے بارے میں ہونے والی کانفرنس سی او پی 28 سے خطاب کریں گے۔ کانفرنس اسی ہفتے دبئی میں منعقد ہونے جا رہی ہے۔ کانفرنس سے متعلق حکام نے منگل کے روز بتایا ہرزوگ اور محمود عباس دونوں کا کانفرنس سے خطاب شیڈول میں شامل ہے۔

دونوں رہنماوں کا کانفرنس سے خطاب جمعہ کے روز ہو گا۔ مگر یہ خطابات صرف تین تین منٹ تک کے محدود وقت کے لیے ہو ں گے۔ توقع کی جارہی ہے کہ جب اسرائیلی صدر کانفرنس سے خطاب کریں گے تو اس وقت فلسطینی اتھارٹی کے صدر محمود عباس بھی کانفرنس ہال میں موجود ہوں گے۔

واضح رہے فلسطینی اتھارٹی کے صدر محمود عباس بہت کم مواقع پر اسرائیلی عہدے داروں سے ملاقات کرتے ہیں۔ اس کانفرنس کے موقع پر ان کے درمیان ملاقات ہو گی یا نہیں اس بارے میں ابھی کچھ واضح نہیں ہے۔

اس وقت اسرائیل اور فلسطینیوں کے درمیان تعلقات میں غیر معمولی کشیدگی ہے کہ تقریبا ً چھ ہفتوں سے زائد کی اسرائیلی بمباری کے نتیجے میں غزہ میں 15000 سے زائد فلسطینی شہید ہو چکے ہیں۔ جن میں چھ ہزار کے قریب فلسطینی بچے تھے۔

تاہم اس وقت عارضی جنگ بندی کی وجہ سے اسرائیلی بمباری میں وقفہ چل رہا ہے۔ یہ وقفہ قطر اور مصر کی کوششوں اور امریکی تعاون سے ممکن ہوا ہے۔ اس پر24 نومبر سے عمل ہو رہا ہے۔ ان حالات میں موسمیاتی تبدیلوں کے حوالے سے یو این کی کانفرنس میں ایک ہی چھت کے نیچے دونوں سربراہان کی موجودگی میں اہم بات ہو گی۔

توقع کی جا رہی ہے کہ کانفرنس میں 140 حکومتوں کے نمائندے اور سربراہان موسمیاتی چیلنجوں کے موضوع پر خطاب کریں گے۔

دوسرے اہم شرکاء میں یوکرین کے صدر زیلنسکی، برطانوی وزیر اعظم رشی سونک، ترکیہ کے صدر طیب ایردوآن، اردن کے شاہ عبداللہ کے علاوہ، امیر قطر شیخ تمیم بن حماد الثانی ، برازیل کے صدر لولا سلوا بھی شامل ہیں۔ برطانیہ کے شاہ چارلس جمعرات کے روز کانفرنس کے افتتاحی سیشن سے خطاب کر سکتے ہیں۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں