غزہ میں جنگ بندی کا نیا دن، مصر اور قطر کی سیز فائر میں دو روزکی توسیع کی کوشش

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

مصر نے حماس اور اسرائیل کے درمیان جنگ بندی میں مزید ایک دن کی توسیع کا اعلان کیا دوسری طرف مصر اور قطر نے مزید دو دن کے لیے جنگ بندی کی کوششیں تیز کردی ہیں۔

مصری محکمہ اطلاعات کے سربراہ ضیاء رشوان نے کہا کہ غزہ کی پٹی میں انسانی ہمدردی کی بنیاد پر جنگ بندی مصر اور قطر کی بھرپور کوششوں سے ایک دن کے لیے بڑھا دی گئی ہے۔

انہوں نے وضاحت کی کہ اس جنگ بندی میں اب تک 10 اسرائیلی نظربندوں کی رہائی اور 30 فلسطینیوں کی رہائی کا معاہدہ شامل ہے جس میں غزہ کی پٹی کے شمال اور جنوب میں انسانی امداد کی مسلسل بہاؤ اسی مقدار میں شامل ہے جس پر گذشتہ چھ میں اتفاق کیا گیا تھا۔

اسٹیٹ انفارمیشن سروس کے سربراہ نے کہا کہ انسانی ہمدردی کی بنیاد پر جنگ بندی کو مزید دو دن تک بڑھانے کے لیے مصر اور قطر کے درمیان رابطے جاری ہیں تاکہ جنگ بندی، مزید قیدیوں اور زیر حراست افراد کو رہا کیا جا سکے۔

ضیاء رشوان نے زور دے کر کہا کہ مصر جنگ بندی کے معاہدے پر عمل درآمد کو قریب سے دیکھ رہا ہے۔ انہوں نے اعلان کیا کہ مصر دونوں فریقوں پر زور دیتا ہے کہ وہ جنگ بندی پر عمل کریں۔

ادھر اسرائیلی فوج نے جمعرات کو کہا تھا کہ حماس کے ساتھ جنگ بندی "یرغمالیوں کی رہائی کے عمل کو جاری رکھنے کے لیے ثالثوں کی کوششوں کی روشنی میں" جاری رہے گی، جب کہ فلسطینی انفارمیشن سینٹر نے آج اطلاع دی ہے کہ اسرائیلی جاسوس طیارے خان یونس کے مشرق میں نچلی پروازیں کررہے ہیں۔

اسرائیلی فوج کے ترجمان اویچائی ادرعی نے "X" پلیٹ فارم پر اپنے اکاؤنٹ کے ذریعے کہا کہ "مغویوں کی رہائی کے عمل کو جاری رکھنے کے لیے ثالثوں کی کوششوں کے تحت عارضی جنگ بندی میں آج جمعرات کی توسیع کی گئی ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں