غزہ: خان یونس میں گھمسان کی جنگ، شہریوں کے انخلاء کا نقشہ جاری

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

غزہ پراسرائیلی بمباری کے دوبارہ شروع ہونے اور جنگ بندی میں توسیع میں ناکامی کے بعد اسرائیلی فوج نے جمعے کے روز غزہ کی پٹی کا ایک نقشہ شائع کیا جس میں مختلف مقامات کی وضاحت کی گئی تھی۔ ان علاقوں میں خان یونس کے مقامات شامل ہیں اور انہیں ’جنگی زون‘ قرار دیا گیا ہے۔

ادھر اسرائیلی فوج کے ترجمان ’اویچائی ادرعی‘ نے "ایکس " (سابقہ ٹویٹر) پر ایک پوسٹ میں کہا کہ جنگ کے اگلے مراحل کی تیاری کے لیےاسرائیلی ڈیفنس فورسز نے غزہ کی پٹی میں انخلاء کے علاقوں (بلاکس) کا نقشہ شائع کیا ہے"۔

ادرعی نے وضاحت کی کہ غزہ کی پٹی کی زمین کو معلوم محلوں کے مطابق علاقوں میں تقسیم کیا گیا ہے تاکہ غزہ کے باشندوں کو ان کی طرف جانے کی اجازت دی جا سکے"۔

انہوں نے ٹویٹ کرتے ہوئے کہا کہ "جنگ کے اگلے مراحل کی تیاری میں فوج نے غزہ کی پٹی میں انخلاء کے علاقوں ("بلاک") کا نقشہ شائع کیا تاکہ غزہ کے باشندوں کو اس طرف متوجہ کرنے، ہدایات کو سمجھنے اور مخصوص جگہوں سے جانے کی اجازت دی جا سکے۔

انہوں نے کہا کہ خان یونس میں فوج کی طرف سے جاری نقشے میں خطرے کے مقامات کی نشاندہی کی گئی ہے اور ساتھ ہی خان یونس اور اطراف میں محفوظ مقامات کے بارے میں بھی بتایا گیا ہے۔

ایک بیان میں فوج نے حماس کے خلاف جنگ کے آغاز سے ہی غزہ کے باشندوں کو انسانی ڈھال کے طور پر استعمال کرنے کا الزام لگایا، اور کہا کہ اس نے اپنے رہائشی علاقوں، ہسپتالوں، مساجد اور اسکولوں میں اپنے ہیڈ کوارٹر اور فوجی انفراسٹرکچر لگائے ہیں"۔

بیان میں کہا گیا ہے کہ "کوئی بھی شخص جو رہائشی بلاک کا نمبر دیکھتا ہے جس میں وہ رہتا ہے یا اس کے قریب ہے، اسے مختلف میڈیا آؤٹ لیٹس کے ذریعے فوج کی ہدایات کو ٹریک کرنا اور ان پر عمل کرنا چاہیے"۔

اسرائیلی نشریاتی ادارے نے فوج کے ایک اہلکار کے حوالے سے بتایا کہ غزہ کی پٹی میں جمعے کو دوبارہ شروع ہونے والی جنگ کو روکنے کا کوئی ارادہ نہیں ہے۔ اہلکار نے کہا کہ والے دنوں میں جنگ جاری رہے گی اور اسے روکنے کا کوئی ارادہ نہیں ہے"۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں