اسرائیلی فوج نے ہلاک شدہ پانچ یرغمالیوں کے خاندانوں کو اطلاع کر دی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

اسرائیلی فوج کی طرف سے جمعہ کے روز اس بات کی تصدیق کر دی گئی ہے کہ اس نے غزہ میں ہلاک ہونے والے پانچ یرغمالیوں کے خاندانوں کو اس بارے میں حتمی طور پر بتا دیا ہے کہ ہلاکتوں کی یہ خبر درست ہے۔ فوجی حکام کے مطابق ان میں سے ایک ہلاک شدہ یرغمالی کی لاش بھی اسرائیل منتقل کر دی گئی ہے۔

اسرائیلی فوج کے ترجمان رئیر ایڈمرل ڈینئیل ہگاری نے اس سلسلے میں تصدیق کرتے ہوئے کہا 'حالیہ دنوں میں اسرائیلی فوج اور پولیس نے یرغمالیوں ایلی یاہو مارگالیت، مایا گورین، رونن اینجل اور آری زلما نووٹز کے اہل خانہ کو بتا دیا گیا ہے کہ ان کی ہلاکت ہو چکی ہے۔'

فوجی ترجمان ڈینئیل ہگاری نے مزید کہا ' ایک پانچویں یرغمالی اوفیر سرفتی کی لاش شناخت ہونے پر پہلے ہی غزہ سے اسرائیل منتقل کی جا چکی ہے۔ ہگاری کے مطابق اب بھی حماس کی قید میں 136 اسرائیلی موجود ہیں۔ جن میں سے 17 عورتیں اور بچے ہیں۔

ایک الگ بیان میں اسرائیلی فوج کی طرف سے بتایا گیا ہے کہ ہلاک شدہ یرغمالی سرفتی کی لاش غزہ میں اسرائیلی فوجیوں اور شین بیت اہلکاروں کو ملی تھی۔ اس لاش کو تدفین کے لیے واپس اسرائیل لایا جا چکا ہے۔

واضح رہے غزہ میں 24 نومبر سے پہلے مسلسل سات ہفتے تک کی گئی بد ترین بمباری کے دوران ہی بعض اسرائیلی یرغمالیوں کی بھی ہلاکت کے بارے میں فلسطینی مزاحمتی گروپ حماس نے انکشاف کیا تھا۔ تاہم اسرائیل نے معاملے کا جائزہ لینے کا فیصلہ کیا تھا۔

سرفتی بھی ان اسرائیلیوں میں شامل تھا، جسے حماس کے جنگجووں نے سات اکتوبر کو پکڑ کر کے غزہ منتقل کر دیا تھا۔ بعد ازاں اسرائیل کی اندھی بمباری کی زد میں خود اسرائیلی یرغمالی بھی آ گئے تھے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں