فلسطین اسرائیل تنازع

اسرائیل کا 7 اکتوبر کے حملے کے ایک منصوبہ ساز کو ہلاک کرنے کا دعویٰ

اسرائیلی جیل میں قید کاٹنے والے وسام فرحات راکٹ سازی میں معاون رہے۔ اس کے ٹھکانے کی نشاندہی کے بعد اسےفضائی حملے میں مار گیا۔

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

اسرائیلی فوج نے ہفتے کے روز انٹرنل سکیورٹی سروس (شن بیٹ) کے ساتھ ایک مشترکہ بیان میں حماس سے منسلک شجاعیہ بریگیڈ کے کمانڈر اور 7 اکتوبر کے حملے کے منصوبہ سازوں میں سے اہم کمانڈر کی ہلاکت کا اعلان کیا۔

فوج اور شن بیٹ نے ٹیلی گرام پر ایک بیان میں کہا ہے کہ اسرائیلی طیارے شجاعیہ بٹالین کے کمانڈر وسام فرحات کو "ختم" کرنے میں کامیاب رہے۔ بیان میں دعویٰ کیا گیا ہے کہ وسان فرحات سات اکتوبر کی کارروائی کے لیے حماس کے اہم منصوبہ سازوں میں سے ایک تھے۔فرحات نے سات اکتوبر کو حماس کے جنگجوؤں کو ناحال عوز اور فوجی کیمپوں میں دھکیل دیا تھا۔

وسام فرحت کی اسرائیل کی طرف سے شائع کردہ تصویر
وسام فرحت کی اسرائیل کی طرف سے شائع کردہ تصویر

فوج اور شن بیٹ نے مزید کہا کہ فرحات اس سے قبل اسرائیل کی ایک جیل میں دس سال تک قید رہا اور جیل سے رہائی کے بعد وہ غزہ واپس آیا اور حماس کے ساتھ مل کر راکٹ بنانے کا کام کیا۔

ایک متعلقہ تناظر میں اسرائیلی فوج نے ہفتے کے روز کہا کہ غزہ ڈویژن کے جنوبی بریگیڈ کا کمانڈر حماس کی طرف سے 7 اکتوبر کو کیے گئے حملے میں مارا گیا۔

اسف حمامی کی گردش کرنے والی تصویر
اسف حمامی کی گردش کرنے والی تصویر

فوج نے ایک بیان میں وضاحت کی کہ اساف حمامی "7 اکتوبر کی لڑائی میں ہلاک ہوئے اور حماس کے جنگجو اور کی لاش کو ساتھ لے گئے تھے۔ فوج نے ان کے خاندان کو ان کی موت کی اطلاع دے دی ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں