سعودی عرب کی طرف سےمعذورطبقےکی بہبود کےلیے فراہم کردہ انقلابی خدمات کےبارے میں جانیے

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
6 منٹس read

سعودی عرب کی حکومت کی جانب سے معذور افراد کی بحالی کے لیے فراہم کردہ خدمات کو عوامی سطح پر سرہا جا رہا ہے۔

ہر سال تین دسمبر معذوری کے عالمی دن اور خصوصی ضروریات کے حامل افراد کے جشن کے موقع پرسعودی عرب میں انسانی وسائل اور سماجی ترقی کی وزارت نے العربیہ ڈاٹ نیٹ کو بتایا کہ حکومت معذور لوگوں کی ترقی، خوشحالی اور انہیں بااختیار بنانے کے لیے ہمہ جہت متنوع خدمات فراہم کرتی ہے۔

ان خدمات میں مالی معاونت کی خدمت سب سے نمایاں ہے جس میں 2023ء تک 419,750 ریال کی مالی امداد کی تقسیم شامل ہے۔ وزارت نے نشاندہی کی ہے کہ مالی امداد معذور افراد کو ایک باوقار زندگی فراہم کرنے اور ان کی بحالی میں معاون ہے۔

انسانی وسائل اور سماجی ترقی کے سرکاری ترجمان محمد الرزقی نے کہا کہ وزارت معذوری کی درجہ بندی اور تشخیص کی خدمت فراہم کرتی ہے، جو استفادہ کنندہ کو اس قابل بناتی ہے کہ وہ اپنے معذوری کے اعداد و شمارکواپ ڈیٹ کرنے کے لیے درخواست جمع کرائے اور وزارت بہبود کی فراہم کردہ خدمات سے مستفید ہو سکے۔اس سروس سے مستفید ہونے والوں کی تعداد 900,000 تک پہنچ گئی جب کہ 292,000 افراد نے ویزا فیس سے استثنیٰ کی خدمت اور وزارت کی ڈیجیٹل ایپلیکیشن کے ذریعے دستیاب الیکٹرانک سہولیات کارڈ سےاستفادہ کیا۔

معذور افراد عوامی سہولت پارکنگ لاٹوں میں داخل ہوں اور معذور افراد کے لیے مختص پارکنگ لاٹوں میں پارک کرسکتے ہیں اور اس سے مستفید ہونے والوں کو سرکاری نقل و حمل پر رعایت دی جاتی ہے۔ سہولت کارڈ سے مستفید ہونے والے لوگوں کی تعداد 183,000 سے زیادہ ہو گئی ہے۔

معذور افراد کے لیے خدمات

انہوں نے مزید کہا کہ وزارت بہبود معذوری کے شکار یونیورسٹی کے طلباء کے لیے معذوری کی درجہ بندی کی خدمت فراہم کرتی ہے اور ان کے لیے کئی ثقافتی اور کھیلوں کے مقابلوں کا بھی اہتمام کرتی ہے۔ وزارت معذور افراد کے لیے پیشہ ورانہ بحالی پر بھی کام کرتی ہے جن میں جسمانی، حسی، یا ذہنی بحالی کی خدمات شامل ہیں۔ معذوری کے بعد ان کی بقیہ صلاحیتوں کے لیے اور ان کو ملازمت دینے کے لیے خدمات کی فراہمی شامل ہے۔ لیبر مارکیٹ میں داخل ہونے کے اہل معذور افراد کی تعداد 5,154 سے زائد افراد تک پہنچ گئی۔

الرزقی نے کہا کہ مالی سال 2023ء کے بجٹ میں "سماجی معاونت اور سبسڈی" کے پروگراموں کے لیے حکومت کی حمایت شہریوں کے لیے سپورٹ اور سماجی نگہداشت کے نظام کو مضبوط بنانے اور تمام شہریوں کے لیے ایک معقول معیار زندگی فراہم کرنے میں معاون ہے۔

معذور افراد کے عالمی دن کے موقع پرانسانی وسائل اور سماجی ترقی کی وزارت سعودی عرب کے وژن 2030 سے اخذ کردہ اپنے اسٹریٹجک اہداف کے حصول کی کوشش کرتی ہے جس کا مقصد معذور افراد کو ہر ممکن خدمات اور مدد فراہم کرنا ہے۔

معذور افراد کی خدمت کے لیے کامیابیاں

انہوں نے یہ مزید کہا کہ وزارت سماجی بہبود نے معذور افراد کے لیے خدمت کے اعلیٰ درجات تک پہنچنے کے لیے بہت سی کامیابیاں حاصل کی ہیں، جن میں بحالی مراکز میں سماجی کام کے لیے رضاکارانہ مواقع کا آغاز کرنا شامل ہے۔ اس خدمت میں 3,182 مواقع شامل ہیں۔ ساتھ ہی سماجی افراد کو متحد کرنے کے لیے ایک گائیڈ تیار کرنا۔ بحالی کے جامع مراکز میں خدمات، پہلی سہ ماہی کے دوران تقریباً 100 مستفید ہونے والوں کو ریفر کرنے کے علاوہ، کئی دوسری خدمات شامل ہیں۔ ان تمام خدمات کے حصول میں کامیاب ہونے والے 270,000 سے زیادہ استفادہ کنندگان کا ڈیٹا اپ ڈیٹ کیا گیا اور فراہم کی گئی تمام خدمات کو مکمل کر لیا گیا۔

انہوں نے کہا کہ مملکت میں معذور افراد کے لیے خدمات کی سہولت فراہم کرنے کی اپنی کوششوں کے ایک حصے کے طور پر وزارت نے بحالی اور سماجی رہ نمائی کا پلیٹ فارم متعارف کیا جس کا مقصد ایک ہی وقت میں معذور افراد اور بحالی مراکز کی ضروریات کو پورا کرنا ہے۔

انہوں نے نشاندہی کی کہ بحالی او سماجی رہ نمائی کا پلیٹ فارم بہت سی خدمات فراہم کرتا ہے، جن میں نجی اور غیر منافع بخش شعبے کو بزرگوں کے لیے مراکز قائم کرنے اور ان کے لیے مناسب خدمات فراہم کرنے کے لیے درخواست جمع کرانے کے قابل بنانا شامل ہے۔

پلیٹ فارم رہائش نگہداشت کے لیے درخواستیں بھی فراہم کرتا ہے۔ایسے بزرگ افراد کا ڈیٹا بھی جمع کرتا ہے جن کے لیے سماجی پہلوؤں مدد کرنا ہے تاکہ یہ معلوم ہوسکے کہ ان کا کوئی کمانے والا نہیں۔

ترقی یافتہ سماجی تحفظ کے نظام کے ذریعے بحالی اور تربیت کے لیے نقد امداد اور مدد، تمام شعبوں کے شراکت داروں کے ذریعے انہیں بااختیار بنانے اور روزگار کی حمایت کے علاوہ مستحق افراد کو زکوٰۃ کے فنڈزسے مستفید کرنےکے لیے ہرممکن اقدامات کیے جا رہے ہیں۔

سروس سینٹرز

انہوں نے کہا کہ وزارت سماجی بہبود ایسے بہت سے مراکز کی نگرانی کرتی ہے جو معذور افراد کو ان کی معذوری کی ڈگری کے مطابق خدمات فراہم کرتے ہیں۔

ان میں پیشہ وارانہ بحالی کے مراکز میں شامل زمرہ جات میں شامل ہیں:

ایسے اداروں میں جسمانی معذوری والے لوگوں کا زمرہ جیسے کہ بالائی یا جسم کے نچلے حصے کا مفلوم ہونا یا دل مرض کا شکار ہونا۔

- بہرے زمرہ، گونگا زمرہ، یا دونوں اور سماعت سے محروم زمرہ۔

- نابینا اور بصارت سے محروم زمرہ۔

- تپ دق کے علاج کی کیٹیگری

-ذہنی معذوری کے شکار افراد کی کٹیگری شامل ہیں۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں