فلسطین اسرائیل تنازع

غرب اردن میں اسرائیلی فوج کا کریک ڈاؤن، جنین، الخلیل، بیت لحم میں چھاپے

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

ایک بار پھر اسرائیلی فوج نے مغربی کنارے کے کئی علاقوں میں چھاپوں اور گرفتاریوں کی مہم شروع کی جس میں دسیوں فلسطینیوں کو حراست میں لے لیا گیا ہے۔

العربیہ/الحدث کے نامہ نگار نے پیر کے روز اطلاع دی کہ اسرائیلی فورسز نے جنین، قلقیلیہ اور الخلیل گورنریوں پر دھاوا بول دیا۔

اسرائیلی فوج کی بھاری نفری مغربی کنارے کے جلزون کیمپ اور جفنا گاؤں میں بھی داخل ہوئی اور گھر گھر تلاشی کا سلسلہ شروع کیا۔

اس کے علاوہ مغربی کنارے میں اریحا میں عقبہ جابر میں گرفتاری مہم شروع کی گئی۔

دو فلسطینی شہید

قلقیلیہ کے کفر سبا محلے میں اسپیشل اسرائیلی فورس کے حملے کے بعد جھڑپیں شروع ہوئیں اور بیت لحم کے دھیشیہ کیمپ میں جھڑپوں کی اطلاعات ہین۔

اسرائیلی فوج نے اعلان کیا کہ اس نے شمالی مغربی کنارے کے علاقے قلقیلیہ میں دو بندوق برداروں کو ہلاک کر دیا۔

7 اکتوبر کو غزہ کی پٹی میں لڑائی شروع ہونے کے بعد سے مغربی کنارے میں فلسطینی شہریوں کی اسرائیلی فوج کے ہاتھوں گرفتاریوں کی رفتار میں اضافہ ہوا ہے۔ دوسری طرف اسرائیلی فوج اور مسلح آباد کاروں کا نہتے شہریوں کے خلاف تشدد میں بھی اضافہ ہوا۔

مغربی کنارے میں جنین میں اسرائیلی دراندازی (آرکائیوز - فرانس پریس)
مغربی کنارے میں جنین میں اسرائیلی دراندازی (آرکائیوز - فرانس پریس)

فلسطینی علاقوں میں اقوام متحدہ کے انسانی حقوق کے ہائی کمشنر کے دفتر نے فلسطینیوں کی اسرائیلی گرفتاریوں میں نمایاں اضافے پر اپنی گہری تشویش کا اظہار کرتے ہوئے جیلوں میں حراست کے دوران تشدد کے الزامات کی تحقیقات کا مطالبہ کیا ہے۔

انہوں نے اس بات کی بھی تصدیق کی کہ اسرائیل نے غزہ پر جنگ کے آغاز کے بعد سے مشرقی یروشلم سمیت مقبوضہ مغربی کنارے میں 3000 سے زائد فلسطینیوں کو گرفتار کیا ہے جن میں بڑی تعداد کو بغیر کسی الزام یا مقدمے کے حراست میں لیا گیا ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں