سعودی 'گرین انیشیٹو' کا دبئی میں بھی آغاز ہو گیا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

سعودی عرب کے 'گرین انیشیٹو' کے تیسرے ایڈیشن نے پیر کے روز سے دبئی میں بھی اپنی سرگرمی کا آغاز کر دیا ہے۔ یہ 'گرین انیشیٹو' اقوم متحدہ کی 'سی او پی 28 کانفرنس' کی جاری سرگرمیوں کے ساتھ ہی شروع کر دیا گیا ہے۔

سعودی وزیر برائے توانائی شہزادہ عبدالعزیز بن سلمان کے پیغام کے ساتھ 'سعودی گرین انیشیٹو' کے تیسرے ایڈیشن کا آغاز ہوا ہے۔ جس میں شہزادہ عبدالعزیز بن سلمان نے سعودی عرب میں 2060 تک ماحولیاتی آلودگی کے مکمل خاتمے سے متعلق سعودی اہداف سے آگاہ کیا۔ جس کے تحت کاربن کے خاتمے کی ٹیکنالوجی اور قابل تجدید توانائی کے ذرائع میں اضافے جیسے اقدامات کیے جائیں گے۔

واضح رہے 'سعودی گرین انیشیٹو' کا آغاز ولی عہد شہزادہ محمد بن سلمان نے 2021 میں کیا تھا۔ جس کے مقاصد میں موسمیاتی تبدیلیوں کا مقابلہ کرنا، زندگی کے معیار کو بہتر بنانا اور آنے والی نسلوں کے لیے کرہ ارض کو محفوظ بنانا شامل ہے۔

'سعودی گرین انیشیٹو' کا اجلاس ہر سال ہوتا ہے اور یہ ایک ایسا پلیٹ فارم بن چکا ہے جہاں دنیا بھر سے پالیسی ساز اور موسمیاتی ماہرین اپنے خیالات کا اظہار کرتے ہیں۔ اس فورم پر ڈسکشنز کی مدد سے موسمیاتی تبدیلیوں کے ممکنہ حل کے لیے تجاویز پیش کی جاتی ہیں۔

'سعودی گرین انیشیٹو' کے مقصد کو حاصل کرنے کے لیے 80 سے زائد دیگر 'انیشیٹوز' لیے گئے ہیں جنھیں 'سعودی گرین انیشیٹو' کے بڑے منصوبوں کے طور پر دیکھا جاتا ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں