صلاح الدین چوک میدان جنگ میں تبدیل ہو چکا: اسرائیلی فوج

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

اسرائیلی فوج نے پیر کے روز اعلان کیا ہے کہ وہ حماس اور دوسرے فلسطینی دھڑوں کے خلاف "زبردست کارروائی" کر رہی ہے اور اس وقت اس کارروائی کا مرکز جنوبی غزہ کا علاقہ خان یونس ہے جہاں حماس کے عسکریت پسندوں کے خلاف آپریشن جاری ہے۔

اسرائیلی فوج کے ترجمان اویچائی ادرعی نے "ایکس" پلیٹ فارم پر بتایا ہے کہ "خان یونس کے علاقے میں اسرائیلی ڈیفنس فورسز کی لڑائی اور فوجی پیش قدمی شمال اور مشرقی حصوں میں صلاح الدین محور تک پھیل چکی ہے اور صلاح الدین چوک جنگ کا میدان بن چکا ہے۔

انہوں نے مزید کہا کہ صلاح الدین محور میدان جنگ میں تبدیل ہو چکا ہے اور اس تک پہنچنا انتہائی خطرناک ہے۔

تاہم انہوں نے نشاندہی کی کہ فوج نے خان یونس کے مغرب میں واقع بائی پاس راستے سے شہریوں کی "انسانی بنیادوں پر" نقل و حرکت کی اجازت دی۔

شمالی غزہ میں آٹھ فوجی زخمی

یہ اس وقت سامنے آیا ہے جب العربیہ/الحدث کے نامہ نگار نے اطلاع دی ہے کہ اسرائیلی توپ خانے نے غزہ کے شمال میں جبالیہ میں کمال عدوان ہسپتال کے آس پاس کے علاقے کو نشانہ بنایا۔

جبکہ ذرائع نے نشاندہی کی کہ شمالی غزہ میں جھڑپوں میں آٹھ اسرائیلی فوجی زخمی ہوئے جن میں سے دو کی حالت تشویشناک ہے۔ انہوں نے مزید کہا کہ انہیں نکالا جا رہا ہے۔

مواصلاتی رابطے منقطع

فلسطینی ٹیلی کمیونیکیشن کمپنی نے غزہ شہر اور شمالی غزہ کی پٹی میں مواصلاتی خدمات کو مکمل طور پر بند کرنے کا اعلان کیا۔ اسرائیلی بمباری سے نیٹ ورک کے بڑےحصے کو شدید نقصان پہنچا ہے۔

اس نے ایک بیان میں کہا کہ اس کا عملہ "زمین پر دستیاب صلاحیتوں کے اندر" مواصلاتی خدمات کو بحال کرنے کے لیے کام کر رہا ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں