غزہ پر زمینی حملے کے دوران اب تک 80 اسرائیلی فوجی ہلاک

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
1 منٹ read

اسرائیلی فوج نے اعتراف کیا ہے کہ غزہ میں اس کے زمینی حملوں کے آغاز سے لے کر اب تک 80 فوجی ہلاک ہوچکے ہیں اسرائیلی فوج کے یہ زمینی حملے 27 اکتوبر سے جاری ہیں تاہم اسرائیلی فوج کے ترجمان نے یہ نہیں بتایا کہ ان ہلاکتوں میں فوجی افسروں کی تعداد کتنی ہے۔

واضح رہے غزہ کے خلاف اپنی جنگ کے آغاز سے لے کر بیس دنوں تک صرف فضائیہ کے زریعے بمباری پر انحصار کیا جبکہ 27 اکتوبر سے آرمرڈ کور سمیت پیدل فوج کو بھی غزہ میں اتار دیا اس زمینی فوج کو مسلسل فضائیہ اور اس کے طیاروں کا کور حاصل رہا جبکہ زمینی افواج کا کئی ہفتوں تک کردار صرف غزہ کی زمینی انٹیلیجنس سے کوآرڈینیٹ کر کے بمباری کرانا رہا ۔ اس کی بنیادی وجہ زمین پر اسرائیلی فوج کو درپیش خوف بنا رہا اور وہ کارپٹ بمباری کے پیچھے پیچھے ہی آگے بڑھ سکی۔

اسرائیلی فوجی ترجمان کے مطابق 7 اکتوبر کو اس کے 1200 لوگ حماس کے حملے کے نتیجے میں مارے گئے تھی ۔ترجمان کے مطابق زیادہ تومر عام شہری ہی تھے ۔اب اسرائیلی فوج کے ترجمان کے جاری کردہ اعداد و شمار کے مطابق اسرائیل کا مجموعی جانی نقصان 1280 ہوگیا ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں