سعودی عرب کے شہری کس شعبے میں رضا کارانہ طور پر خدمات کو پسند کرتے ہیں؟

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

زیادہ تر سعودی رضاکار ضیوف الرحمان کی خدمت کے لیے رضاکارانہ طور پر کام کرنے کی طرف راغب ہوتے ہیں۔ یہ رضا کارانہ خدمات حجاج کرام کی خدمت، حرمین شریفین میں آنے والوں کے مہمانوں کی خدمت اور رمضان المبارک میں روزہ داروں کی سحری اور افطاری میں مدد پر مشتمل ہیں۔

سعودی عرب کی وزارت برائے انسانی وسائل اور سماجی ترقی میں رضاکارانہ خدمات اور کمیونٹی کی شرکت کے جنرل ایڈمنسٹریشن کے ڈائریکٹر جنرل مشاعل المبارک نے زور دے کر کہا کہ رضاکاروں کے درمیان تمام شعبوں میں مثبت مقابلہ ہے، لیکن ضیوف الرحمان کی خدمت کا میدان اس بات کا گواہ ہے سعودی شہری اللہ کے مہمانوں کی خدمت میں بڑھ چڑھ کر حصہ لیتے ہیں۔

العربیہ ڈاٹ نیٹ کے ساتھ اپنی گفتگو کے تناظر میں انہوں نے بتایا کہ ضیوف الرحمان کی خدمت کرنے والے رضاکاروں کی تعداد تقریباً 119,000 تک پہنچ گئی ہے۔

المبارک بتاتے ہیں کہ رضاکارانہ اور کمیونٹی کی شرکت کی جنرل ایڈمنسٹریشن کے دو معیار ہیں۔ ایک رضاکارانہ کام کے لیے سعودی قومی معیار جس میں رضاکارانہ خدمات کو ادارہ جاتی بنانے اور اس کے بنیادی ڈھانچے کی تعمیر کے لیے 19 معیارات اور 42 طرز عمل شامل ہیں۔

انہوں نے مزید کہا کہ "سرکاری اور غیر منافع بخش شعبوں میں 350 سے زیادہ رضاکار یونٹس قائم کیے گئے تھے، تاکہ رضاکاروں کا شعبہ زیادہ منظم اور رضاکاروں کی حفاظت کےمطابق خدمات انجام دے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں