جنگ خاتمہ کے لیے گوتریس کے اقدام کا خیر مقدم کرتے ہیں: فلسطینی وزارت خارجہ

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
4 منٹس read

فلسطینی وزارت خارجہ نے آرٹیکل 99 کے حوالے سے اقوام متحدہ کے سیکرٹری جنرل گوتریس کے اقدام کا خیرمقدم کیا اور اسے غزہ جنگ کے خاتمے کے لیے ضروری سمجھا۔

فلسطینی وزارت خارجہ نے اقوام متحدہ کے خلاف اسرائیل کی جانب سے کی جانے والی "سیاسی دہشت گردی" کی مذمت کرتے ہوئے سلامتی کونسل سے اپنی ذمہ داریاں پوری کرنے کا مطالبہ کیا۔ ایک غیر معمولی اقدام میں اقوام متحدہ کے سکریٹری جنرل نے باضابطہ طور پر 15 رکنی سلامتی کونسل سے مطالبہ کیا کہ وہ پٹی میں "انسانی تباہی" کو روکنے کے لیے اپنا تمام اثر و رسوخ استعمال کرے۔

2017 میں اقوام متحدہ کے سیکرٹری جنرل کے طور پر اپنی تقرری کے بعد پہلی مرتبہ انہوں نے اقوام متحدہ کے چارٹر کے آرٹیکل 99 کا سہارا لیا۔

یہ آرٹیکل اقوام متحدہ کے رہنما کو کسی بھی ایسے معاملے کو سلامتی کونسل میں بھیجنے کی اجازت دیتا ہے جس کے بارے میں ان کے خیال میں بین الاقوامی امن اور سلامتی کو خطرہ ہے۔

اقوام متحدہ کی نیوز ویب سائٹ نے کہا کہ غزہ اور اسرائیل میں قلیل مدت میں ہونے والے جانی نقصان کی شدت کو دیکھتے ہوئے گوتریس نے آج سلامتی کونسل کے صدر کو ایک خط بھیجا جس میں انہوں نے پہلی مرتبہ اقوام متحدہ کے آرٹیکل 99 کو فعال کیا۔ نیشن چارٹر ایک ایسا مضمون جو اقوام متحدہ کے چارٹر میں شاذ و نادر ہی استعمال ہوتا ہے۔

گوتریس کا یہ اقدام بدھ کے روز اس وقت آیا جب انہوں نے انسانی وجوہات کی بناء پر غزہ میں جنگ بندی کا مطالبہ دہرایا۔

گوتریس نے سلامتی کونسل کو لکھے اپنے خط میں یہ بھی لکھا کہ دنیا کو انسانی نظام کے خاتمے کے سنگین خطرے کا سامنا ہے۔ صورتحال تیزی سے بگڑ رہی اور ایک تباہی میں بدل رہی ہے۔ اس صورت حال کے ممکنہ طور پر ناقابل واپسی اثرات فلسطینیوں پر اور مجموعی طور پر خطے میں امن اور سلامتی پر پڑ رہے ہیں۔ انہوں نے مزید کہا کہ اس طرح کے نتائج سے ہر قیمت پر گریز کیا جانا چاہیے اور یہ ایک فوری معاملہ ہے۔ یاد رہے گوتریس کے پیغام کے گردش میں آنے کے فوری بعد متحدہ عرب امارات اور روس نے اعلان کیا کہ وہ جمعہ کو مشرقی وقت کے مطابق صبح 10 بجے سلامتی کونسل کا ہنگامی اجلاس طلب کر رہے ہیں۔

بعد ازاں متحدہ عرب امارات نے سلامتی کونسل کے دیگر ارکان میں ایک مسودہ قرارداد تقسیم کیا جس میں گوتریس کے پیغام کا حوالہ دیا گیا اور انسانی بنیادوں پر فوری جنگ بندی کا مطالبہ کیا گیا۔

یورپی یونین کی خارجہ پالیسی کے اہلکار جوزپ بوریل نے بھی جمعرات کو اقوام متحدہ کے سکریٹری جنرل گوتیرس کی حمایت کی۔ بعد ازاں اقوام متحدہ کے چارٹر کے آرٹیکل 99 کو فعال کر دیا گیا۔

دوسری طرف اقوام متحدہ میں اسرائیلی سفیر گیلاد اردان نے گوتریس کو شدید تنقید کا نشانہ بنا ڈالا اور ان کے خط کو "ایک نئی اخلاقی پستی" قرار دے دیا۔ اردان نے اقوام متحدہ کے سیکرٹری جنرل پر الزام لگایا کہ وہ "آرٹیکل 99" کو صرف اسرائیل پر دباؤ ڈالنے کے لیے استعمال کر رہے ہیں۔ اسرائیلی وزیر خارجہ ایلی کوہن نے اعلان کیا ہے کہ انہوں نے اقوام متحدہ کے انسانی ہمدردی کے رابطہ کار لین ہیسٹنگز کا رہائشی ویزا منسوخ کرنے کا فیصلہ کرلیا ہے۔ واضح رہے غزہ کی لڑائی میں اسرائیل نے 62 دنوں میں شدید بمباری کرکے 17177 فلسطینیوں کو جاں بحق کردیا ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں