حماس انٹیلی جنس کے دو سرکردہ عہدیداروں کو مارنے کا اسرائیلی اعلان

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

اسرائیل نے جمعرات کو جنگ کے 62 ویں روز بھی غزہ کی پٹی میں اپنی فوجی کارروائیاں جاری رکھیں اور اعلان کیا کہ اس نے حماس کے دو سرکردہ انٹیلی جنس عہدیداروں کو مار دیا ہے۔ فوج نے ایک بیان میں کہا ہے کہ یہ دو عہدیدار "عبدالعزیز الرنتیسی" اور "احمد عیوش" ہیں۔ الرنتیسی ملٹری انٹیلی جنس میں تھے اور عیوش سرکاری نظام القارا بٹالین میں کام کرتے تھے۔

اسرائیل نے بتایا کہ ان دونوں کو ایک فضائی حملے میں مارا گیا۔ انہیں کئی روز قبل حماس کی ملٹری انٹیلی جنس کے ایک مرکزی آپریشن روم کے اندر نشانہ بنایا گیا تھا۔

اسرائیلی فوج نے مزید کہا کہ الرنتیسی نے پٹی میں تمام جاسوسی کی کارروائیوں کی ذمہ داری لی تھی۔ الرنتیسی سات اکتوبر کے حملے کی منصوبہ بندی میں بھی شراکت دار تھا۔ عیوش حملے کے نفاذ کی تصاویر جمع کرنے کا ذمہ دار تھا۔

سرنگ پر بمباری

دوسری جانب تحریک حماس کے عسکری ونگ القسام بریگیڈز نے جمعرات کو اعلان کیا ہے کہ اس نے غزہ کی پٹی میں دو اسرائیلی فوجیوں کو ہلاک کر دیا ہے۔ انہوں نے غزہ شہر کے مشرق میں واقع شجاعیہ کالونی میں سنائپرز کے ذریعے فوجیوں کو نشانہ بنایا۔

القسام بریگیڈز نے بتایا کہ اس نے غزہ شہر کے شیخ رضوان کالونی میں اسرائیلی فوجیوں کی موجودگی میں ایک سرنگ کو دھماکے سے اڑا دیا۔ دھماکے سے سرنگ میں آنیوالے فوجی ہلاک ہوگئے۔ القسام نے مزید کہا کہ گزشتہ 72 گھنٹوں میں 79 اسرائیلی فوجی گاڑیوں کو مکمل یا جزوی تباہ کردیا گیا ہے۔

واضح رہے سات اکتوبر سے شروع جنگ کے 62 ویں دن فلسطینی حکام نے بتایا کہ صہیونی جارحیت میں شہید ہونے والے فلسطینیوں کی تعداد 17177 ہوگئی ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں