نقل مکانی پر موقف تبدیل نہیں ہوا، اتھارٹی ہم سے بات چیت نہیں کر رہی: حماس

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
3 منٹس read

حماس کے پولیٹیکل بیورو کے رکن حسام بدران نے کہا ہے کہ فلسطینیوں کی نقل مکانی کے حوالے سے تحریک حماس کے موقف میں کوئی تبدیلی نہیں آئی ہے۔ اس حوالے سے کسی کو غلط فہمی ہوئی ہوگی۔ اسی لئے ہم بے گھر ہونے کی بات کو بالکل بھی قبول نہیں کرتے۔

انہوں نے دوحہ سے العربیہ کے ساتھ فون کال پر گفتگو میں کہا کہ اسرائیل کی عظیم صلاحیتوں کے باوجود غزہ کے دفاع میں جنگ جاری ہے۔ فلسطینی اتھارٹی نے جنگ کے کسی بھی مرحلے پر حماس کے ساتھ بات چیت نہیں کی۔ انہوں نے کہا کہ بدقسمتی سے اتھارٹی نے ہم سے رابطہ نہیں کیا۔ اس کا یہ مطلب نہیں کہ مسئلہ فلسطین ختم ہو گیا ہے۔

یاد رہے اسامہ حمدان نے بدھ کے روز ٹیلی ویژن بیانات میں کہا تھا کہ فلسطینیوں کو غزہ سے باہر دھکیلنے کی کسی بھی کوشش کا مطلب یہ نہیں ہے کہ مسئلہ فلسطین ختم ہو گیا ہے۔ ہم جہاں ہیں وہیں رہیں گے اور مزاحمت جاری رکھیں گے۔

حمدان نے یہ بھی کہا کہ کوئی سوچ بھی نہیں سکتا کہ صحرائے سینا فلسطینیوں کو نگل جائے گا۔ اس کے برعکس سرحدی علاقہ میں اسرائیل کے خلاف ایک سے زیادہ مزاحمتی اڈے قائم ہوں گے۔ انہوں نے مزید کہا کہ اس مسئلے کا حل فلسطینیوں کو بے گھر کرنا نہیں بلکہ قبضہ ختم کرنا ہے۔

دوسری طرف تحریک فتح نے غزہ سے فلسطینیوں کی نقل مکانی کے بارے میں حماس کے رہنما اسامہ حمدان کے بیانات کی مذمت کی اور انہیں "غلط" قرار دیا۔ تحریک فتح کے ترجمان حسین حمائل نے کہا کہ حمدان کے بیانات ناقابل قبول ہیں اور یہ ایسی سمت نہیں ہیں جو ہماری قیادت اور نقل مکانی کو مسترد کرنے والے لوگوں کے موقف کی خدمت کرے۔

حمائل نے مزید کہا کہ حماس کو یہ سمجھنا چاہیے کہ فلسطینی شہری کی جان متعصبانہ مفادات سے زیادہ اہم ہے۔ انہیں ایسی سمت میں بات کرنی چاہیے جو فلسطینی عوام کی خدمت کرے اور یہ معاملہ فلسطینیوں کے خون کی قیمت پر نہیں ہونا چاہیے۔

بعد ازاں انہوں نے العربیہ کو انٹرویو دیتے ہوئے کہا کہ اسامہ حمدان کے بیانات غزہ میں جاری خون کے درمیان بروقت نہیں ہیں۔ حماس جو چاہتی ہے وہ کہتی ہے۔ تاہم ایک تحریک کے طور پر ہمارا موقف فلسطینیوں اور عربوں پر واضح ہے۔ یہ جھگڑے کا وقت نہیں ہے کیونکہ فلسطینیوں کو قتل کیا جا رہا ہے۔

ریڈ لائن

یاد رہے مصر نے بارہا غزہ سے صحرائے سینا تک فلسطینیوں کی نقل مکانی کو مسترد کیا ہے۔ مصری صدر عبدالفتاح السیسی نے حال ہی میں کہا تھا کہ فلسطینیوں کی سینا کی طرف نقل مکانی مصر کے لیے ایک "سرخ لکیر" ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں