اسرائیلی فوج نے غزہ میں قبروں کو بھی بلڈوزروں سے روند ڈالا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

غزہ کی پٹی پر اسرائیلی جنگ جاری ہے۔ اسرائیلی فوج نے غزہ کی پٹی کی اینٹ سے اینٹ بجا دی ہے۔ پورے پورے محلے ملبے کا ڈھیر بنانے کے بعد قبرستانوں کو بھی نہیں بخشا جا رہا۔ قابض فوج نے کئی مقامات پر ٹینکوں اور بلڈوزروں کی مدد سے قبریں بھی رونڈ ڈالیں اور بربریت کی نئی تاریخ رقم کی ہے۔

قبریں اکھاڑ پھینکیں

اسرائیلی فوج کی بربریت سے غزہ میں انسان، حیوان، شجر اور حجر کوئی بھی محفوظ نہیں۔ صہیونی فوج نے تباہی کا ایک قدم اور بڑھاتے ہوئے الزیتون کالونی میں قبرستان اکھاڑ پھینکے۔ قبروں سے لاشیں نکال پھینکیں اورقبروں کا نام ونشان بھی مٹا دیا۔

اسرائیلی بلڈوزر نے غزہ شہر کے شمال میں جبالیہ کے علاقے میں قبروں کواکھاڑ پھینکا اورالزیتون میں بھی قبرستان بھی ملیا میٹ کردیے۔

ٹینکوں نے جبالیہ میں الفلوجہ محلے میں قبروں کے پتھروں کو روندنے اور کچلنے کے بعد تباہ کر دیا۔

اسرائیلی فوج کی طرف سے جھڑپوں کے دوران بلڈوزروں کے ذریعے قبروں کی مسماری کی ویڈیوز سامنے آئی ہیں۔

اطلاعات کے مطابق اسرائیلی ٹینکوں نے سینکڑوں قبروں کو بلڈوز کر کے ان کے اندر موجود قبروں کو کچرے کے ڈھیروں کے ساتھ ساتھ ان سے مردہ افراد کی لاشیں نکال دیں۔

المناک صورتحال

قابل ذکر ہے کہ گذشتہ سات اکتوبر کو غزہ کی پٹی میں فوجی اڈوں اور بستیوں پر حماس کی جانب سے کیے گئے اچانک حملے کے بعد اسرائیل نے غزہ پر خوفناک جنگ مسلط کررکھی ہے۔

غزہ کی پٹی میں تقریباً 1.9 ملین فلسطینی بے گھر ہوچکے ہیں اور اس وقت بڑی تعداد میں لوگ جنوبی غزہ میں جمع ہیں۔

اس کے علاوہ غزہ میں حماس کی وزارت صحت نے اعلان کیا کہ اسرائیلی بمباری کے نتیجے میں شہید ہونے والوں کی تعداد 18,600 سے زیادہ ہو گئی ہے، جن میں اکثریت خواتین اور بچوں کی ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں